- الإعلانات -

چودہ اپریل سے شروع ہونے والے فلائٹ آپریشن میں زیادہ سے زیادہ پاکستانیوں کو وطن واپس لا سکیں گے، مخدوم شاہ محمود قریشی

 وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے بیرون ملک پاکستانیوں سے اپیل کی ہے کہ موجودہ صورتحال میں صبر و تحمل کا مظاہرہ کریں، آپ کو وطن واپس لانا ہماری ذمہ داری ہے، ہم انشاء اللہ اس ضمن میں ہر ممکن اقدامات اٹھائیں گے، پہلے صوبے ایئرپورٹ کھولنے پر آمادہ نہیں تھے اب انہوں نے آمادگی کا اظہار کر دیا ہے ، 14 اپریل سے شروع ہونے والے فلائٹ آپریشن میں زیادہ سے زیادہ پاکستانیوں کو وطن واپس لا سکیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو پارلیمنٹ ہائوس میں کورونا وائرس سے متعلقہ خصوصی پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس میں کیا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ شہریار آفریدی نے ذیلی کمیٹی کی مفصل رپورٹ ہمارے سامنے رکھی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت تک 39748 پاکستانی بیرونی ممالک میں وطن واپسی کے منتظر ہیں۔ متحدہ عرب امارات میں بہت سے ایسے پاکستانی وطن واپسی کے منتظر ہیں جو اس وبا کی وجہ سے روزگار سے محروم ہو چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اب تک 1640 پاکستانیوں کو 12 خصوصی فلائٹس کے ذریعے واپس لایا گیا ہے۔ ان 1640 مسافروں میں سے ترکی سے آنیوالے 22 مسافر اور چھ دوسری فلائٹس سے کرونا مثبت آئے ہیں۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ 2248 پاکستانی، وطن واپسی کے منتظر ہیں جو اس وقت انڈونیشیا، کینیا یوگنڈا، اور سوڈان میں موجود ہیں۔ اگلا مرحلہ کل سے شروع ہو رہا ہے جنہیں 9 پروازوں سے لایا جائے گا۔ ان میں بیرون ممالک میں مقید پاکستانی بھی شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ تعداد بڑھ سکتی تھی لیکن صوبے ایر پورٹس کھولنے پر آمادہ نہیں تھے لیکن اب صوبوں نے آمادگی کا اظہار کر دیا ہے اس لئے ہم 14 اپریل سے شروع ہونے والے آپریشن میں زیادہ پاکستانیوں کو لا سکیں گے۔ امریکہ اور کینیڈا میں مقیم پاکستانی بھی واپس آنا چاہتے ہیں طلباء واپس آنا چاہتے ہیں لہذا یہ 40ھزار کی تعداد بڑھ سکتی ہے۔ ہمیں تمام پہلوؤں کو مدنظر رکھتے ہوئے لائحہ عمل اپنانا ہو گا۔ وزارت خارجہ، اس سلسلے میں ہر ممکن تعاون فراہم کرے گی۔ ہمارے دنیا بھر میں سفارت خانے نامساعد حالات کے باوجود، بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کا بھرپور خیال رکھ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں بیرون ملک مقیم پاکستانیوں سے درخواست کروں گا کہ آپ اس صورت حال کے پیش نظر تحمل کا مظاہرہ کریں آپ کو وطن واپس لانا ہماری ذمہ داری ہے اور ہم انشائ اللہ اس ضمن میں ہر ممکنہ اقدام اٹھائیں گے۔ نیپال میں ہمارے 14 پاکستانی جبکہ مالدیپ میں 04 پاکستانی واپسی کے منتظر ہیں انہیں ایک جگہ، ایک اسٹیشن پر اکٹھا کر کے واپس لائیں گے۔ یہ عالمی وبا ہے امریکہ اور یورپ کی صورت حال آپ کے سامنے ہے