- الإعلانات -

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے آئی ایم ایف کی نمائندہ سے ملاقات

 وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے جمعرات کو وزارت خارجہ میں آئی ایم ایف کی پاکستان میں نمائندہ مس ٹریسا ڈبن ساشیز نے ملاقات کی۔ملاقات کے دوران فریقین نے کووڈ 19 وبائی صورتحال اور اس وبا سے موثر انداز میں نبرد آزما ہونے کیلئے باہمی مشاورت جاری رکھنے کا فیصلہ کیا۔سیکرٹری خارجہ سہیل محمود اور ڈی جی یو این فرخ اقبال خان بھی اس ملاقات میں شریک تھے۔بات چیت کے دوران کورونا عالمی وبائی چیلنج کی موجودہ صورتحال اور اس سے پیدا ہونے والے معاشی مضمرات پر تفصیلی تبادلہ خیال ہوا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان نے اپنے محدود معاشی وسائل کے باوجود کورونا وبا کے پھیلاو¿ کو روکنے اور منفی معاشی اثرات کے ازالے کیلئے موثر اقدامات کئے۔انہوں نے کہاکہ موجودہ عالمی وبا نے پوری دنیا کی معیشت کو متاثر کیا ہے لیکن ترقی پذیر ممالک پر اس وبا کے منفی اثرات انتہائی شدید ہیں۔اسی صورت حال کے پیش نظر وزیر اعظم عمران خان نے اس کٹھن گھڑی میں کمزور معیشتوں کو سہارا دینے کیلئے ترقی پذیر ممالک کے واجب الادا قرضوں میں سہولت فراہم کرنے کی تجویز دی تاکہ یہ ممالک اپنے وسائل کو اس وبا کو روکنے اور قیمتی انسانی جانوں کو بچانے کیلئے استعمال میں لا سکیں۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ آئی ایم ایف، ورلڈ بینک اور جی 20 ممالک کی طرف سے ترقی پذیر ممالک کو قرضوں کی ادائیگی میں سہولت اور معاشی معاونت کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ موجودہ وبائی چیلنج کو سامنے رکھتے ہوئے، ترقی پذیر ممالک کی معاشی بحالی کیلئے غیر مشروط معاونت فراہم کی جائے