- الإعلانات -

وزیراعظم کے مشیربرائے خزانہ ومحصولات ڈاکٹرعبدالحفیظ شیخ کا معروف تاجروں اورصنعت کاروں کے اجلاس و ویڈیوکانفرنس سے خطاب

وزیراعظم کے مشیربرائے خزانہ ومحصولات ڈاکٹرعبدالحفیظ شیخ نے کہاہے کہ حکومت کیش میں کمی ، کیش کے بہاﺅ میں روانی سمیت صنعت وتجارت کودرپیش دیگرمتعلقہ مسائل کے حل میں پرعزم ہے ، اس ضمن میں سیلزٹیکس اورانکم ٹیکس ری فنڈزکی مدمیں 115 ارب روپے کے اجراءاورسالوں سے زیرالتواءڈیوٹی ڈرابیک کی ادائیگی کی صورت میں کام پہلے سے شروع ہوچکاہے۔انہوں نے یہ بات جمعرات کویہاں وزارت خزانہ میں معروف تاجروں اورصنعت کاروں کے ایک اجلاس و ویڈیوکانفرنس کے دوران کہی ، وفاقی وزیرصنعت وپیداوارمحمد حماداظہر،وزیراعظم کے مشیربرائے تجارت عبدالرزاق داﺅد،چئیرپرسن ایف بی آر نوشین جاویدامجد اوروزارت خزانہ کے سینئیرافسران بھی اس موقع پرموجودتھے۔ مشیرخزانہ نے تاجروں اورصنعت کاروں کی جانب سے تجارت اورصنعتوں کے معاونت بارے تجاویز اورسفارشات سنے اورشرکاءکویقین دلایاکہ حکومت تجارت اورصنعت سے متعلق مسائل کے حل کا باریک بینی سے جائزہ لے گی اور انہیں صنعتوں کیلئے جامع ریلیف پیکج کاحصہ بنایاجائیگا۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت نے فاسٹرنظام کے تحت 57 ارب روپے کے کلیمزمیں سے 52 ارب روپے جاری کردئیے ہیں، دیگرشعبوں کیلئے سیلزٹیکس ری فنڈ کی مد میں 52 ارب روپے کے کلیمزمیں سے 25 ارب روپے جاری کئے گئے،باقی ماندہ کلیمز ایک ہفتے میں اداکئے جائیں گے،اسی طرح حکومت نے ڈی ایل ٹی کے تحت 30 ارب روپے کلئیر اورڈیوٹی ڈرابیک کی مد میں 15 ارب روپے کی اداےئگی کردی ہے۔ ڈاکٹرعبدالحفیظ شیخ نے کہاکہ اس کے ساتھ ساتھ حکومت نے 2014ءسے انکم ٹیکس ری فنڈ کے تمام کلیمزکی آئندہ ہفتے سے ادائیگی کافیصلہ کیاہے، اس سے ایک لاکھ ٹیکس گزاروں کوفائدہ پہنچے گا اورانہیں 50 ارب روپے مالیت کی ری فنڈزکی ادائیگی کی جائیگی۔ قبل ازیں تاجروںاورصنعت کاروں نے بڑی صنعتوں اورچھوٹے ودرمیانہ درجہ کے کاروبار کے مسائل کے حل کیلئے جامع ریلیف پیکج کا مطالبہ کیا