- الإعلانات -

،وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کی قائم مقام افغانی وزیر خارجہ سے گفتگو

 وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان افغانستان کے ساتھ اپنے دو طرفہ تعلقات کو انتہائی اہمیت دیتا ہے، پاکستان ایک مضبوط، متحد، مستحکم، خوشحال اور پر امن افغانستان کے قیام کیلئے معاونت جاری رکھے گا۔ ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق وزیر خارجہ نے پیر کو افغانستان کے قائم مقام وزیر خارجہ حنیف آتمر سے ٹیلیفونک رابطہ کیا۔دونوں وزرائے خارجہ کے مابین کرونا وائرس کے پھیلاو¿ کو روکنے، دو طرفہ تعلقات اور علاقائی امن و استحکام کے حوالے سے تفصیلی تبادلہ ءخیال ہوا۔وزیر خارجہ نے حنیف آتمر کو افغانستان کے قائم مقام وزیر خارجہ کا منصب سنبھالنے پر مبارکباد دیتے ہوئے توقع ظاہر کی کہ ان کی موجودگی میں، پاک افغان دو طرفہ تعلقات کو فروغ ملے گا۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان ایک اہم ہمسایہ کے طور پر افغانستان کے ساتھ اپنے دو طرفہ تعلقات کو انتہائی اہمیت دیتا ہے۔انہوں نے کہا کہ موجودہ وبائی صورتحال کے پیش نظر پاکستان نے افغانستان کی درخواست پر افغان باشندوں اور مال بردار کنٹینرز کی نقل و حرکت کیلئے بہت سے اقدامات کئے۔توقع ہے کہ پاک افغان دو طرفہ تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کیلئے اے پیپس (اے پی اے پی پی ایس) کا اگلا اجلاس جلد منعقد ہو گا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان افغان امن عمل میں اپنا مصالحانہ کردار، خلوص نیت سے ادا کرتا رہے گا۔امریکہ طالبان امن معاہدہ کی صورت میں، افغان قیادت کے پاس ایک نادر موقع ہے کہ وہ افغانستان میں دیرپا امن و استحکام کو یقینی بنانے کیلئے مشترکہ کاوشیں بروئے کار لا سکتے۔وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان ایک مضبوط، متحد، مستحکم، خوشحال اور پر امن افغانستان کے قیام کیلئے معاونت جاری رکھے گا