- الإعلانات -

وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی زیر صدارت اعلی سطحی اجلاس

وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی زیر صدارت اعلی سطحی اجلاس ہوا ،جس میں کورونا وائرس کے تناظر میں کوئٹہ کے اسپتالوں میں فراہم کی گئی سہولیات اور اسپتالوں کی ضروریات کا جائیزہ لیا گیا ،اجلاس میں فاطمہ جناح چیسٹ اینڈ جنرل اسپتال کے آکسیجن پلانٹ کی اپ گریڈیشن کی منظوری دی گئی اورشیخ زید اسپتال سول اسپتال اور بی ایم سی اسپتالوں کے آکسیجن پلانٹس کو بھی بھرپور طور پر فعال رکھنے کی ہدایت کی گئی ،اجلاس میں فاطمہ جناح اسپتال میں آئی سی یو بیڈز کی تعداد میں اضافے کے بھی فوری اقدامات اور مطلوبہ فنڈز کے اجراءکی منظو ری دے دی گئی ،سیکرٹری صحت نے اجلاس کو بتایا کہ کوروناوائرس ٹیسٹ کے لیے ایک مزید پی سی آر مشین اور ٹیسٹنگ کٹس کوئٹہ پہنچے سے ٹیسٹ کرنے کی صلاحیت میں اضافہ ہوا ہے ،اسلام آباد سے لیبارٹری تربیت مکمل کر کے واپس پہنچنے والے ٹیکنیشنز کو فاطمہ جناح اسپتال کی لیبارٹری میں تعینات کر دیا گیا ہے۔کوئٹہ میں 5000رینڈم ٹیسٹنگ کی تیاری مکمل دو دن کے اندر آغاز کیا جائے گا۔محکمہ صحت کو کورنا وائرس ایمرجنسی کے تحت ملنے والے 20 کروڑ روپے سے طبی آلات کی خریداری کی گئی پی ڈی ایم اے کے تحت طبی سامان کی 80 فیصد خریداری مکمل کی ہے ،سیکریٹری خوراک نے اجلاس کو بتا یاگندم کے دستیاب اسٹاک سے فلور ملوں کو کل سے گندم کی فراہمی شروع کر دی جائی گئی نئی فصل سے دس لاکھ بو ری گندم کی خرید کے انتظامات مکمل کر لی گئی ہے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کورونا وائرس سے صحت کے نظام اور اسپتالوں کی کمزوریاں سامنے آرہے ہیںایسا کوئی میکنزم نہیں بنایا گیا جس سے خرابی کے زمہ دار جواب دہ ہوسکیںکوئٹہ کے تین اسپتالوں کے آکسیجن پلانٹس کے لی گئی ماضی میں 500 ملین روپے جاری ہوچکے ہیں ۔عوام کاپیسہ ضائع کرنے والوں کو جواب دینا ہو گافائر فائیٹنگ کی بجائے مستقل بنیادوں پر پالیسیوں کی ضرورت ہے۔چیلنجز سے نمٹنے کے لیے پیشگی تیاری کا رجحان پیدا کرنا ہو گاکورونا وائرس کا ایمرجنسی فیز گزر گیا اب موجودہ صورتحال کے مطابق بروقت فیصلوں کی اہمیت ہے۔وزیراعلیٰ بلوچستان نے کہا کہ کورونا وائرس کا مقامی سطح پر پھیلا¶ تشویش ناک ہےموجودہ صورتحال کے مطابق تیاری کرنا ہے تمام متعلقہ محکموں کو زمہ داریاں دے دی گئیں اب وہ اس کے مطابق کام کریں کورنا وائرس کے چیلنج سے نمٹے کی کامیابی یا ناکامی سیاسی قیادت اور بیوروکریسی کی مشترکہ ہو گی۔بحثیت حکومت اپنے ہر عمل کی زمہ دار اور جواب دہ ہیں