- الإعلانات -

موٹروے کا سنگ بنیاد رکھ دیا گیا

سکھر: وزیراعظم نواز شریف نے پاک چین اقتصادی راہداری (سی-پیک) منصوبے کے تحت سکھر-ملتان موٹر وے کا سنگ بنیاد رکھ دیا گیا۔

سکھر-ملتان موٹر وے 393 کلو میٹر طویل ہے جس پر 294 ارب روپے لاگت آئے گی، جسے 36 ماہ میں مکمل کیا جائے گا۔

افتتاحی تقریب میں وزیراعظم نواز شریف کے علاوہ سندھ کے وزیراعلیٰ سید قائم علی شاہ، مسلم لیگ (ن) سندھ کے صدر اسماعیل راہو، وفاقی وزیر مملکت برائے مواصلات عبد الحکیم بلوچ، چین کے پاکستان میں قائم مقام سفیر جیاو لی جن سمیت دیگر حکام شریک ہوئے۔

وزیراعظم نواز شریف کی سکھر آمد پر افتتاحی تقریب کے لیے بڑے پیمانے پر انتظامات کیے گئے، جس میں عارضی پنڈال کے ساتھ ساتھ بڑی تعداد میں ایئر کنڈیشنرز بھی لگائے گئے۔

ڈان نیوز کے مطابق پورے پنڈال میں ایئر کنڈیشنرز کو چلانے اور بجلی کی سپلائی بحال رکھنے کے لیے 1000KV کے 10 سے زائد جنریٹر لگائے گئے۔

وزیراعظم کی آمد پر روہڑی بائی پاس کے قریب جنگل میں بھی سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے، جبکہ سکھر کے علاوہ دیگر اضلاع سے بھی پولیس اہلکاروں کی ڈیوٹی لگائی گئی۔

پنڈال میں 2000 سے زائد کرسیاں لگائی گئیں جبکہ جلسہ گاہ کے قریب ہیلی پیڈ بھی بنایا گیا۔

وزیر اعظم نواز شریف سکھر تا ملتان موٹروے کا سنگ بنیاد رکھنے کے لیے سکھر ایئر پورٹ پہنچے تو سندھ کے وزیراعلی سید قائم علی شاہ نے دیگر حکام کے ہمراہ ان کا استقبال کیا۔

وزیر اعظم کی آمد پر ایک جانب کارکنان اپنے رہنما کا خطاب سننے کے لیے موجود تھے تو دوسری جانب مسلم لیگ (ن) کے کارکنان کی بڑی تعداد نے پارٹی کی طرف سے نظرانداز کیے جانے پر ناراضگی کا اظہار کیا اور پریس کلب کے سامنے مظاہرہ کیا.

سکھر-ملتان موٹر وے کا منصوبہ پاک چین اقتصادی راہداری (سی-پیک) کا حصہ ہے، اس منصوبے پر 281 ارب ڈالر کی لا گت آئے گی۔

سکھر ملتان موٹر وے 36 ماہ میں مکمل ہو گا، اس منصوبے میں 54 پل ، 11 سروسز ایریا آئیں گے، سب سے بڑا پل دریائے ستلج پر تعمیر ہوگا جبکہ اس کے علاوہ 426 انڈر پاسز، 11 انٹرچینج اور 10 فلائی اوور بھی اس منصوبے کا حصہ ہوں گے۔

موٹروے 6 رویا ہوگا اور اس کی لمبائی 393 کلو میٹر ہو گی، اس موٹروے کو چین کی کمپنی چائنا اسٹیٹ کنسٹرکشن و انجنئیرنگ تعمیر کرے گی۔