- الإعلانات -

منی لانڈرنگ ریفرنس: شہباز شریف کے بعد دو اور شخصیات کو گرفتار کا حکم

لاہور کی احتساب عدالت نے منی لانڈرنگ ریفرنس میں مسلم لیگ (ن) کے صدر اور سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز اور بیٹی رابعہ عمران کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیے۔

صوبائی دارالحکومت میں قائم احتساب عدالت میں جج جواد الحسن نے شریف خاندان کے خلاف منی لانڈرنگ ریفرنس کی سماعت کی۔

اس حوالے سے جب آج جب شریف خاندان کے خلاف منی لانڈرنگ ریفرنس کی سماعت ہوئی تو عدالت نے شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز اور بیٹی رابعہ عمران کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردیے۔تحریر جاری ہے‎

عدالت کی جانب سے یہ وارنٹ گرفتاری ان دونوں کے پیش نہ ہونے پر جاری کیے گئے، ساتھ ہی عدالت نے دونوں شہباز شریف کی اہلیہ اور بیٹی کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کرنے کا حکم دے دیا۔

خیال رہے کہ اس سے قبل 14 ستمبر کو لاہور کی احتساب عدالت نے منی لانڈرنگ ریفرنس میں نصرت شہباز اور رابعہ عمران کے جاری کیے تھے۔

دوران سماعت عدالت میں دفتر خارجہ کی جانب سے شہباز شریف کے بیٹے سلمان شہباز اور داماد ہارون یوسف سے متعلق رپورٹ پیش نہیں کی گئی۔

جس پر عدالت نے آئندہ سماعت پر دفتر خارجہ کے ذمہ دار افسر کو ریکارڈ سمیت طلب کرلیا۔۔

علاوہ ازیں عدالت نے مذکورہ معاملے میں ہی شہباز شریف کی دوسری بیٹی جویریہ علی کی مستقل حاضری سے استثنیٰ کی درخواست کو بھی منظور کرلیا۔

ساتھ ہی منی لانڈرنگ ریفرنس پر مزید کارروائی 5 اکتوبر تک ملتوی کردی۔

خیال رہے کہ 28 ستمبر کو لاہور ہائی کورٹ نے آمدن سے زائد اثاثہ جات اور منی لانڈرنگ کیس میں سابق وزیراعلیٰ پنجاب اور مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کی ضمانت کی درخواست مسترد کردی تھی، جس کے بعد قومی احتساب بیورو (نیب) نے انہیں احاطہ عدالت سے ہی گرفتار کرلیا تھا۔