- الإعلانات -

قومی اسمبلی میں 22ویں آئینی ترمیم متفقہ طور پر منظور

اسلام آباد: قومی اسمبلی نے الیکشن کمشنرز کی تقرری کے طریقہ کار سے متعلق 22ویں آئینی ترمیم کی متفقہ طور پر منظوری دے دی ہے۔

قومی اسمبلی كے اجلاس میں وفاقی وزیر قانون زاہد حامد نے 22 ویں آئینی ترمیم كا بل پیش كیا، بل پر رائے شماری كے دوران ایوان میں 236 اركان موجود تھے اور تمام اراكین نے آئینی ترمیم كے حق میں ووٹ دیا۔ ترمیمی بل كے ذریعے آئین كے 8 آرٹیكلز میں ترمیم كی منظوری دی گئی۔ بل كے تحت چیف الیكشن كمشنر اور اركان الیكشن كمیشن كے تقرر كے طریقہ كار تبدیل كیا گیا ہے اور اب سپریم كورٹ كے حاضر سروس یا ریٹائرڈ جج كے علاوہ اب كم سے كم 20 سالہ تجربہ كا حامل سركاری افسر یا ٹیكنوكریٹ بھی چیف الیكشن كمشنر مقرر ہو سكے گا۔