- الإعلانات -

میاں صاحب ہم کرپٹ ہیں تو آپ نے پکڑا کیوں نہیں ؟،عمران خان

سوات (مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہاہے کہ میاں صاحب نے سوات اور ڈی آئی خان میں بھی ایئرپورٹ بنانے کا اعلان کر دیاہے ،میاں صاحب آپ اتنی دیر رہیں گے تو ایئرپورٹ بنے گا ،آپ تیسری دفعہ وزارت عظمیٰ پر ہیں لیکن ابھی تک آپ نے باری پوری نہیں کی ،میاں صاحب قومیں موٹر وے سے نہیں بنتیں ،پاناما لیکس پر نوازشریف کو جواب دینا پڑے گا ،میاں صاحب ہم کرپٹ ہیں تو آپ نے پکڑا کیوں نہیں ؟ہماری حکومت آئی تو کرپشن کا پوچھیں گے نہیں بلکہ سیدھا جیل میں ڈالیں گے۔
سوات میں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہناتھا کہ اتنے بڑے استقبال پر آپ کا شکریہ ادا کرتاہوں ،جب میں سیاست میں آیا تو میں نے پہلا الیکشن سوات سے لڑا ،میرا پہلا الیکشن تھا لیکن سوات کے لوگوں نے جو مجھے عزت دی وہ میں کبھی نہیں بھولوں گا ،آج جسلے میں جو اتنے لوگ آئے ہیں یہ میری وجہ سے آئے ہیں یا وزیراعظم کو پیغام دینے آئے ہیں؟ مجھے نہیں پتا تھا کہ اتنے لوگ آئیں گے ۔
انہوں نے کہا کہ آپ نوجوان پاکستان کا مستقبل ہیں ،آپ کو معلوم ہونا چاہیے کہ نیا پاکستان کیسے بنے گا ،آپ سمجھیں کہ عظیم ملک کیسے بنتاہے ،سب سے پہلے یاد رکھیں جو قوم اپنے بچوں کو تعلیم نہیں دیتی وہ کبھی ترقی نہیں کرتی ۔میاں صاحب جہاں جاتے موٹر وے بنانے کا اعلان کرتے ہیں ،یہاں سوات میں بھی انہوں نے موٹر وے بنانے کا اعلان کیا ،یہ ہو ہی نہیں سکتا کہ وہ تقریر کریں اور یہ نہ کہیں کہ موٹر وے بن جائے گا ۔عمران خان کا کہناتھا کہ میان صاحب موٹر وے سے قومیں نہیں بنتیں ،یہ جو آپ کہتے ہیں کہ آپ کو ہیلی کاپٹر سے نیا پختونخواہ نظر نہیں آیا وہ آپ کو نظر نہیں آئے گا کیونکہ نیا پختون خواہ سکولوں اور یونیورسٹیوں میں بنے گا ۔سب سے زیادہ پیسہ ہمارے صوبے میں تعلیم پر خرچ کیا گیا اور اس کے بعد ہسپتالوں میں پیسہ خرچ کیا گیا ،پختونخواہ پاکستان میں مثال بنے گا ۔میاں صاحب نے سوات اور ڈی آئی خان میں بھی ایئرپورٹ بنانے کا اعلان کر دیاہے ،میاں صاحب آپ اتنی دیر رہیں گے تو ایئرپورٹ بنے گا ،آپ تیسری دفعہ وزارت عظمیٰ پر ہیں لیکن ابھی تک آپ نے باری پوری نہیں کی ۔
انہوں نے کہا کہ ہم نے پوری کوشش کی کہ ہسپتالوں کیلئے نیا قانون لے کر آئیں ،ابھی تک پوری طرح کامیاب نہیں ہوئے لیکن اس سال کے آخر میں آپ کو سارے پختونخواہ کے ہسپتالوں میں واضح فرق نظر آئے گا ،ہم نے سکولوں کا نظام بدلہ ،ہسپتالوں میں تبدیلی میں وقت لگا ،لیکن ہم اس پوزشین میں آ گئے ہیں ہمارے ہسپتال پورے پاکستان میں مثال بنیں گے ،خیبر پختون خواہ کو ماڈل صوبہ بنائیں گے ۔ان کا کہناتھا کہ ہماری واحد حکومت ہے جس نے اپنی آنے والی نسلوں کیلئے شجر کاری شروع کی ،پانچ سالوں میں ایک ارب درخت لگانے کافیصلہ کیا ،گلوبل وارمنگ سے متاثر ہونے والا پاکستان آٹھواں ملک ہے ،ہماری حکومت پہلی پاکستان کی حکومت ہے جس نے فیصلہ کیاہے کہ ایک ارب درخت اگائیں گے ۔عمران خان کاکہناتھا کہ ہم نے پختونخواہ میں اداروں کو مضبوط کیا ہے ،،ہمیں فخرہے ہماری پولیس سب سے بہترین پولیس بن گئی ہے ،یہ اس لیے بنی ہے کیونکہ اس میں کوئی سیاسی مداخلت نہیں ہے ،ہماری پولیس نے سورن سنگھ کے قاتلوں کو 24گھنٹوں میں پکڑ لیاہے ،سورن سنگھ کے جانے پر مجھے بڑی تکلیف ہوئی ہے ۔
عمران خان کا کہناتھا کہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی دفعہ گاﺅں کی سطح پر الیکشن ہوئے ہیں ،حکومت سے اقتدار لے کر نیچے پہنچا دیاہے ،اس میں مسئلے آرہے ہیں اور وہ آئیں گے کیونکہ یہ پہلی دفعہ ہواہے کہ اختیارات نچلی سطح پر منتقل کیے گئے ہیں ،اس کو ٹھیک کرنے میں وقت لگے گا ،ہم نے عام عوام کو اختیار دیدیئے ہیں ،آپ خود فیصلہ کریں کہ آپ نے کہاں پیسہ خرچ کرناہے ۔جب بلدیاتی نظام صحیح طرح چلنا شرو ع ہو جائے گا اس وقت اصل تبدیلی آئے گی ۔انہوں نے کہا کہ نوازشریف تیس سال سے حکومت کر رہے ہیں پنجاب میں آپ نے کوئی ادارہ ٹھیک نہیں کیا ،آپ نے کونسا ادارہ ٹھیک کیاہے؟ بتائیں مجھے ۔ہماری پہلی باری آئی ہے اور پولیس ہماری سب سے بہتر ہے اور کرپشن ہمارے صوبے میں سب سے کم ہے ،لیکن جب ہم نے حکومت سنبھالی تھی تو صوبے میں سب سے زیادہ کرپشن تھی ۔انہوں نے کہا کہ نوازشریف نے پنجاب پولیس کا جوحال کیاہے کہ چھوٹو گینگ نہیں سنبھالا جاتا لیکن ہماری پولیس طالبان کے ساتھ لڑ رہی ہے ،ہم پولیس کی تنخواہوں میں مزید اضافہ کریں گے ۔عمران خان کاکہناتھا کہ پاناما لیکس پر متحدہ اپوزیشن کے ساتھ ہیں لیکن ضروری ہوا تو الیکے ہی جائیں گے ،پاناما لیکس پر نوازشریف کو جواب دینا پڑے گا ،اگر وزیراعظم کا احتساب کر لیا تو ملک کی تقدیر بدل جائے گی ۔
چیئرمین پی ٹی آئی کا کہناتھا کہ ہم نے اس ملک کے طاقت ور ڈاکوﺅں کا احتساب کرنا ہے ،دو سو ارب ڈالر پاکستانیوں کا پاکستان سے باہر پڑا ہواہے اگر وہ پیسہ پاکستان میں واپس آ جاتاہے تو ہمارے سارے قرضے اتر جائیں گے ۔یہ پیسہ لانے کیلئے ایسی لیڈر شپ چاہیے جو کرپٹ نہ ہو ،نوازشریف کا اپنا پیسہ باہر پڑا ہے وہ کیسے چوری کا پیسہ پاکستان لائیں گے ،بیرون ملک میں پڑا پیسہ تحریک انصاف ملک میں واپس لائے گی۔ان کا کہناتھا کہ میاں صاحب ہم کرپٹ ہیں تو آپ نے پکڑا کیوں نہیں ؟ہماری حکومت آئی تو کرپشن کا پوچھیں گے نہیں بلکہ سیدھا جیل میں ڈالیں گے ۔عمران خان نے جلسہ کے شرکاءسے کہا کہ جب نوازشریف یہاں آئیں تو ان سے یہ تین مطالبے کیجیئے گا ،پہلا بجلی کا حصہ دیں، لوڈشیڈنگ ختم کریں،دوسرا مطالبہ کے پی کے کو گیس کا شیئر دیں،کے پی کے کو پانی دیں، چشمہ رائٹ بینک کیلئے پیسہ دیں۔