- الإعلانات -

حکومت نے پیپلز پارٹی میں دوبارہ جان ڈال دی ، معاملات افہام و تفہیم سے حل کرنے چاہئیں ، جلسے سینیٹ الیکشن تک رہیں گے ، ایس کے نیازی

حکمران اپنی توانانیاں اپوزیشن کے جلسے روکنے کی بجائے عوامی مسائل حل کرنے پر صرف کرے ، حکومت نے 50لاکھ گھروں کا وعدہ کیا تھا، کم از کم 25لاکھ گھر ہی بنا دے

حکومت پانچ سال پورے کرے، مہنگائی اور دیگر مسائل کنٹرول کرلئے جائیں تو آج اپوزیشن کے جلسے اتنے بڑے نہیں ہوتے، کرونا سے احتیاط کرنا چاہئے

عمران خان پر سرمایہ کار اعتبار کرتے ہیں ، مگر ان کی ٹیم اچھی نہیں ہے ، اپنی ٹیم میں بہتر لوگ رکھنے ہونگے ، ان افراد کو ترجیح دیں جو پہلے سے ہی انسانی خدمت میں مصروف ہیں

پیپلز پارٹی کی کراچی میں حکومت ہے وہ قربانی نہیں دے گی ، عمران خان 50لاکھ گھروں کا وعدہ کیا تھا کم از کم 25لاکھ ہی بنا دیں ، حالات خراب اور انتہائی فکر انگیز ہیں

اپوزیشن کی کوشش ہے حکومت کارکردگی نہ دکھا سکے ، حکومت وعدے پورے کرتی تو آج اپوزیشن کی واویلا پر عوام سڑکوں پر نہ آتی ، آج عوامی مسائل حل ہوں تو جلسے ناکام ہو جائیں گے

عمران خان جیسا لیڈر ملنا مشکل ہے ، اس کی کوئی ذاتی خواہش نہیں ، غریب عوام مہنگائی کی چکی میں پس رہی ہے ، اپوزیشن حکومت کیلئے مشکل وقت پیدا کررہی ہے

حکومت جلسے روک رہی ہے مگر اپوزیشن پھر بھی جلسے کررہی ہے ، حکومتی رٹ کدھر ہے ، حکومت کیساتھ ق لیگ کے خدشات موجود ہیں ، پروگرام ’’ سچی بات ‘‘ میں گفتگو

اسلام آباد(روزنیوزرپورٹ)پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز کے چیف ایڈیٹر اور روزنیوز کے چیئرمین ایس کے نیازی نے پروگرام ’’ سچی بات ‘‘ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کرونا کے حالات بہت خراب ہیں ، حکومت اور اپوزیشن نے جلسے کیے ، یہ لمحہ فکریہ ہے ، ملتان کے حالات بھی دیکھ رہا تھا، حکومت کی مہربانی سے پیپلز پارٹی میں جان پڑ گئی ، افہام و تفہیم سے معاملات حل کرنے چاہئے، ایک دوسرے پر کیچڑ نہیں اچھالنا چاہئے ، یہ توانائی عوامی مفاد پر خرچ کرے تو بہتر ہوتا، موجودہ اسلام آباد کے ایم این اےز تو شاید حلقوں میں بھی نہیں جاتے ، ن لیگ نے بھی خاطر خواہ کام نہیں کئے تھے، حکومت کو بار بار درخواست کرتا ہوں کہ عمل کی طرف جائے ، حکومت کو جلسے نہیں روکنے چاہئیں ، اپوزیشن اور عوام کو کرونا سے احتیاط کرنا چاہئے ، حکومت تین پوائنٹ پر ڈیلور کرے ، 50لاکھ گھر نہ سہی 25لاکھ گھر بن جاءجیں ، انہوں نے کہا پیپلز پارٹی کی کراچی میں حکومت ہے ، مجھے نہیں لگتا کہ وہ قربانی دے گی ، ایس کے نیازی نے کہا کہ ہلال احمر میں روز 100سے 150لوگوں کا کھانا بھیجیں گے ، ابرا ر الحق آپ انسانی حقوق کے وزیر ہیں ، حکومت کو کیوں نہیں کہتے مہنگائی کنٹرول کرے ک، ادویات دے ، جو وعدے کئے وہ پورے کر تی تو آج اتنے بڑے بڑے جلسے نہ ہوتے ، حکومت کا فرض ہے کہ وہ عوام کے مسائل حل کرے ، ایک مرتبہ عمران خان میرے ساتھ جارہے تھے ، فٹ پاتھ پر سوئے لوگوں کو دیکھ کر رہا کہ میں حکومت میں آیا تو ان لوگوں کو گھر دونگا ، عوام کو سروس دیں ، عمران خان پر لوگ اعتماد کرتے ہیں ، 18لاکھ گز کا پلاٹ اسلام آباد میں فروخت ہوا، سرمایہ کار عمران خان پر اعتماد کرتے ہیں ، ٹیم درست نہیں ہے ، اپنی ٹیم اچھی بنائیں ، ٹیسک میں عمران خا ن کی ٹیم ناکام ہے ، حکومت نے پیپلزپارٹی کو پنجاب میں زندہ کر دیا، اپوزیشن چاہتی ہے کہ حکومت ڈیلور نہ کرے ، حکومت عوام کے بنیادی مسائل حل کرے، نہ کہ اپنی توانائی اپوزیشن کے جلسوں کو روکنے پر صرف کرے ، اپوزیشن جو واویلا مچا رہی ہے اگر حکومت وعدے پورے کرتی تو حالات ایسے نہ ہوتے ، تحریک انصاف عوامی مسائل حل کرے گی تو اس کا گراف بلند ہو گا، حکومت مدینہ کی ریاست والے کام نہیں کر رہی ، عمران خان جیسا لیڈر نہیں ملنا، ان کی کوئی ذاتی خواہش نہیں ، اپنی ٹیم اچھی بنائیں ، ایسے لوگوں کو لے جو پہلے سے انسانی خدمت کر رہے تھے، اپوزیشن کے جلسوں سے غیر یقنین صورتحال پیدا ہو رہی ہے ، حالات کو گڑ بڑ ہیں ، جلسے حالا تکو خراب ہی کرتے ہیں ، حکومت کیلئے مشل وقت پیدا کررتے ہیں ، انہوں نے کہا کہ حکومت 5سال گزارے گی ، یہ جلسوں کے حالات سینیٹ الیکشن تک ہی رہیں گے ، مہنگائی بہت بڑا مسئلہ ہے ، غریب عوام اس سے متاثر ہیں ، حکومت نے جو وعدے کئے وہ پورے نہیں کئے ، حکومت ڈنڈا چلانے کی بات کرتی ہے تو اپوزیشن بھی ڈنڈا چلانے کی باتیں کررہی ہے ، حکومت جلسہ روکتی ہے ، اپوزیشن کرتی ہے ، تو پھر حکومت کی رٹ کدھر گئی ہے ، چوہدری برادران سے لگتا ہے کوئی مشاورت نہیں ہورہی ، یہ لمحہ فکریہ ہے ، یہ سینئر سیاستدان ہیں ، ان کے خدشات تو موجود ہونگے ۔