- الإعلانات -

دنیا میں سب سے پہلے برطانیہ میں کرونا وائرس کی ویکسین آگئی ہے ، ڈاکٹر رضوان

پہلے برطانیہ اپنے شہریوں کو ویکسین لگائے گا اس کے بعد دیگر دنیا کے ممالک کو فراہم کی جائے گی ، سچی بات میں گفتگو
اسلام آباد(روزنیوزرپورٹ)برطانیہ سے ڈاکٹر رضوان بٹ نے پروگرام سچی بات میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ برطانیہ کو یہ اعزاز حاصل ہوا کہ وہ دنیا کا پہلا ملک بنا جس نے ویکسن لگانے کی اجازت دیدی ، یہاں ویکسن کو چیک کو چیک کرنے کا سخت رین نظام ہے ، جب تک ویکسن محفوظ اور ٹھیک نہ ہو مارکیٹ کرنے کی اجازت نہیں دیتے ، کرونا کو پابندیوں سے ہی کنٹرول کیا جا سکتا ہے ، ساری عمر تو لاک ڈاءون نہیں چل سکتا، ظاہر ہے ویکسن کا فائدہ ہو گا کہ لوگ عام زندگی گزار سکیں گے ، انہوں نے کہا کہ ویکسن کے منفی پہلو ساءڈ ایفکٹ ہوتے ہیں ، ویکسن وائرس سے ہی تیار کی گئی ہے ، وائرس کا حصہ ہی باڈی میں داخل کیا جائیگا، فائنر والوں نے 4لاکھ لوگوں پر ٹیسٹ کر چکے ہیں ، کہیں سے بھی منفی رپورٹ نہیں آئی ، البتہ جسم درد اور بخاری ہو جاتا ہے ، ہم جو ڈاکٹر ہیں ہر سال ویکسین لگتی ہے ، اس میں ایک دن کے لئے درد یا بخاری ہوتا ہے ، یہ سائیڈ ایفکٹ نہیں ہوتا ، امیون سسٹم بحال ہوتا ہے ،نہیں لگتا ہے کہ اس ویکسن کے کوئی منفی پہلو سامنے نہ آئے ، آکسفورڈ والی ویکسین کو لائسنس نہیں ملا ، کیونکہ ٹرائل کے دوران ایک بندہ مر گیا تو ٹرائل فوری بند کر دیا گیا ، بعد میں پتہ چلا کہ موت کسی اور وجہ سے ہوئی پھر ٹرائل دوبارہ شروع ہو ، برطانیہ نے 40ملین خواک کا آرڈ کیا تھا، برطانیہ کی 50ملین ہے ، ابھی انہوں نے پہلے یہ برطانوی عوام کو لگے گی ، مارچ اپریل تک 40ملین خوراک آجائیگ، برطانیہ کے بعد پھر فیصلہ ہو گا، پھر دی جائے گی، جو بہت لسٹ بنائی ہے ، 80لاکھ سے زائد افراد کو لگائی جائیگی ۔