- الإعلانات -

بد قسمتی سے پاکستان کو آج تک کوئی اچھا لیڈر نہیں ملا،چیف جسٹس

لاڑکانہ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس انور ظہیر جمالی نے کہا ہے کہ بہتر حکمرانی، کرپشن، اقرابا پروری کے خاتمے کیلئے آسمان سے کوئی نہیں آئے گا بلکہ ہم میں سے ہی کسی کو آگے آنا ہوگا ۔
لاڑکانہ ڈسٹرکٹ بار سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ اپنے ذاتی مقاصد کیلئے قانون سازی کی گئی اور ہمارے ملک میں ضرورت سے زیادہ ہی قانون سازی کردی گئی ۔ اینٹی کرپشن، ایف آئی اے اور نیب کا قانون بنایا گیالیکن کوئی ایک بھی ادارہ اپنی ذمے داری پوری کرنے میں کامیاب نہیں ہوا کسی کیخلاف کارروائی کی جاتی ہے تو ایک بڑی لابی تحفظ کرنے آجاتی ہے۔
انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے آزادی کے بعد سے 30 سال مارشل لا کی نظرہوگئے اور ملک میں 30 سال ڈنڈے کے زور پر حکومت کی گئی اور بد قسمتی سے ہمیں وہ لیڈر شپ نہیں ملی جو قوموں کو ترقی کی منازل پر پہنچا دیتی ہے اور اگر ہمیں ایسی لیڈر شپ میسر آجائے تو صرف ایک دہائی میں تمام مسائل حل ہوجائیں گے اورہماری آنے والی نسلیں اقوام عالم میں سر اٹھا کر چل سکیں گی۔ہمارے اندرخامیاں ہیںاور جب تک ان پر قابو نہیں پائیں گے مسائل اسی طرح چلتے رہیں گے۔