- الإعلانات -

طلبہ تنظیموں سے آئے سیاستدان وفا داریاں تبدیل نہیں کرتے،رضا ربانی

اسلام آباد چیئر مین سینٹ رضا ربانی نے کہا ہے کہ پاناما لیکس پر تحقیقات کے حوالے سے چیف جسٹس کے خط کو عملی جامہ پہنانے کا خواہش مند ہوں ۔ان کاکہنا ہے کہ آئین کو مضبوط اور مستحکم بنانے کے لیے جدو جہد کرنا ہو گی ۔
یوتھ پارلیمنٹ سے خطاب کرتے ہوئے رضا ربانی نے کہا کہ طلبہ تنظیمیں سیاسی جماعتوں کا اہم ترین ستون رہی ہیں لیکن جنرل ضیا نے طلبہ تنظیموں پر پابندی لگائی۔انہوں نے کہا کہ طلبہ تنظیموں سے آئے سیاستدان وفا داریاں تبدیل نہیں کرتے اور نہ ہی کرپٹ ہیں ،طلبہ تنظیموں سے آئے سیاستدان بہترین رہنما ہیں ۔ان کا کہنا تھا کہ ضیا الحق کے دورمیں جہادی تنظیمیں پروان چڑھتی رہیں اور خطرہ نہیں سمجھی گئیں ،یہ ہی تنظیمیں آج قومی سلامتی کے لیے بڑا خطرہ بن گئی ہیں ۔رضا ربانی نے کہاکہ آئین کے ذریعے تمام اداروں کو یکجا کرنے کو یقینی بنا یا جائے ۔انہوں نے مزید کہا کہ آئین چند کاغذوں کا مجموعہ کہہ دیا جائے تو اس کا مقصد ہی ختم ہو جاتا ہے ،آئین موجود ضرور ہے مگر اس ے ہر چندسال بعد توڑ دیا جاتا ہے ۔