- الإعلانات -

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں مذہبی مقامات کے تحفظ سے متعلق قرارداد منظور

نیویارک : اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں مذہبی مقامات کے تحفظ سےمتعلق قرارداد منظور کرلی گئی ، قراردادمیں مذہبی مقامات کو ختم یازبردستی تبدیل کرنے کی حرکت کی مذمت کی گئی۔اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں مذہبی مقامات کے تحفظ سےمتعلق قراردادمنظور کرلی گئی ، قراردادکی سرپرستی پاکستان،سعودی عرب اوردیگراوآئی سی ممالک نے کی۔

قراردادمیں مذہبی مقامات کوختم یازبردستی تبدیل کرنے کی حرکت کی مذمت کی گئی ، اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم نے کہا کہ قرارداد وزیراعظم پاکستان کی اسلاموفوبیاکیخلاف کوشش کاحصہ ہے،م قرارداد بھارت میں ہندوتواانتہا پسندوں کے لئے سرزنش ہے، بھارت میں مذہبی مقامات کونقصان پہنچائےجانے کی مذمت کی گئی۔

دوسری جانب اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم نے پیغام میں کہا تھا کہ گوکدال کےقتل عام کی31ویں برسی ہے ، 21جنوری1990میں بھارتی قابض فوج نےبزدلانہ،وحشیانہ حملہ کیا۔

منیر اکرم نے بھارتی حملےمیں شہیدہونیوالےبہادر کشمیریوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا تھا کہ ہمارےدل شہداگوکدال کےخاندانوں کےاہلخانہ کےساتھ ہیں، ایک لاکھ سے زائد کشمیریوں نےجدوجہدآزادی کی قیمت ادا کی ہے، حکومت پاکستان کشمیری بھائیوں،بہنوں کےغم میں شریک ہیں۔

اقوام متحدہ میں مستقبل مندوب کہنا تھا کہ ہماراایمان ہےاللہ شہداکی قربانیوں کورائیگاں نہیں جانےدیتا، ہم ان کی انصاف پسند جدوجہد کی حمایت میں ثابت قدم ہیں، وہ دن دور نہیں جب قبضہ کی تاریک رات ختم ہو گی۔

انھوں نے مزید کہا کہ ہمارےشہداکا لہو آزادی کےمیٹھےطلوع فجر میں سرگرداں ہوگا، قوم جموں وکشمیرکےعوام کیساتھ یکجہتی اورمضبوطی سے کھڑی ہے۔