- الإعلانات -

پاکستان اور افغانستان مذاکرات کامیاب طور خم بارڈر کھول دیا گیا

پاکستان اور افغانستان کے حکام کے درمیان کامیاب مذاکرات کے بعد طور خم بارڈر کھول دیا گیا، افغانستان سے آنے والے افراد کیلئے شناختی دستاویزات لازمی قرار دے دی گئیں۔

طورخم:  پاکستان اور افغان حکام کے درمیان مذاکرات کامیاب ہو گئے ہیں اور طور خم بارڈر چھ روز بعد کھول دیا گیا ہے۔ کرفیو بھی ختم کر دیا گیا۔ بارڈر پر تعمیر ہونے والے گیٹ کو شہید میجر علی جواد کے نام سے موسوم کر دیا گیا ہے۔ پاکستانی فورسز کی جانب سے افغان بارڈر فورسز کو کھجور اور آم کے تحفے دیئے گئے۔

سرحد کھولنے کے بعد طور خم بارڈر پر آمد و رفت بحال ہو گئی جس پر شہریوں نے خوشی کا اظہار کیا ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ افغانستان سے آنے والے افراد کیلئے شناختی دستاویزات لازمی قرار دی گئی ہیں۔ بغیر دستاویزات والے شخص کو واپس بھیج دیا جائے گا۔ سرحد پر سکیورٹی انتظامات انتہائی سخت ہیں اور ہر آنے اور جانیوالے کو سخت چیکنگ کے بعد چھوڑا جا رہا ہے۔ طور خم بارڈر پر چھ روز تک حالات کشیدہ رہے۔افغان فورسز کی جانب سے پاکستان کے سرحدی علاقوں پر بلااشتعال فائرنگ کی گئی جس میں ایک پاکستانی میجر علی جواد چنگیزی نے جام شہادت نوش کیا۔ فائرنگ سے سکیورٹی اہلکاروں سمیت متعدد افراد زخمی بھی ہوئے۔