- الإعلانات -

ہر لیک ہونے والی ویڈیو کی ذمہ دار وزارت داخلہ نہیں ہر صوبہ خود ہے ، وزیر داخلہ

اسلام آباد  وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار نے کہا ہے کہ تین ملزموں کی ویڈیوز لیک ہوئیں لیکن یہ وزارت داخلہ کی ذمہ داری نہیں ہے ،پہلی ویڈیو بلوچستان میں لیک ہوئی جس کی ذمہ داری بلوچستان حکومت پر عائد ہوتی ہے ،خالد شمیم اڈیالہ جیل میں تھا اس لیے ویڈیو لیک ہونے کی انکوائری کرائی جس کی تحقیقاتی رپورٹ جلد منظر عام پر آجائے گی۔ان کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر عاصم کی ویڈیو لیک ہونے پرتحقیقات کے لیے سندھ حکومت کو خط لکھ دیا ہے ،وفاقی حکومت بھی ہر قسم کے تعاون کے لیے تیار ہے لیکن جس طرح کے بیانات آرہے ہیں مجھے ان پر افسوس ہے ۔
قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ ایسے واقعات کو بند ہونا چاہیے ،انہیں روکنے کی ذمہ داری صوبوں پرعائد ہوتی ہے ،یہ عدالتوں کی تضحیک اور عدالتی نظام پر اثر انداز ہونے کی کوشش ہے ۔بھارت کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے چوہدری نثار نے کہا کہ ہندو انتہا پسند تنظیمیں پاکستان اور بھارت کے تعلقات کے درمیا ن میں رکاوٹ ہیں ،ہندہ انتہا پسند تنظیموں کا بھارتی حکومت پر اثر و رسوخ ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان دوستی کی پالیسی مودی کی امریکی کانگریس میں تقریر سے واضح ہے ،بھارت تعلقات کی بحالی میں سنجیدہ ہے تو مذاکرات کے دروازے اتنے عرصہ بند کیوں کیے ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان کے کسی ملک یاسر براہ حکومت سے تعلقات پاکستان کے مفادات سے منسلک ہیں ،بھارتی وزیر خارجہ کی جانب سے انہیں ذاتی رنگ دینا کسی طور مناسب نہیں ۔