- الإعلانات -

قومی اسمبلی کے اجلاس میں قندیل بلوچ کے چرچے

اسلام آباد  قومی اسمبلی میں وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی گھڑی کا چرچا اسمبلی میں تیسرے روز بھی جاری رہا جبکہ ساتھ میں قندیل بلوچ کی بھی بازگشت سنی گئی ۔
قومی اسمبلی کے اجلاس میں آزاد رکن جمشید دستی نے شاہ جی گل آفریدی کی موجودگی میں ایوان کو آگاہ کیاکہ رکن اسمبلی شاہ جی گل آفریدی ، اسحاق ڈارکی گھڑی 20 لاکھ روپے میں خریدنے پر آمادہ ہوچکے ہیں۔ اسحاق ڈار کے کہنے کے مطابق 50 ہزار غریب اسمبلی ملازمین کو دے دیں جبکہ باقی ساڑھے 19 لاکھ کسی خیراتی ادارے کو دے دیں۔ وزیر خزانہ اسحاق ڈار صاحب شاہ جی گل آفریدی کا شکریہ ادا کریں اور آگے بڑھیں۔
جمشید دستی نے اپنی تقریر کے دوران قندیل بلوچ کا تذکرہ بھی کردیا جس پر ارکان اسمبلی نے ان پر خوب آوازے کسے ۔ جمشید دستی کا کہنا تھا کہ اس ملک میں بڑے لوگوں کا اپنا ہی نظام ہے عام آدمی نے ملک سنبھالا ہوا ہے اور وہ ملک سے مخلص بھی ہے اور ٹیکس بھی دے رہا ہے اورامیر جس طرح ٹیکس دے رہے ہیں اس پر ہمیں شرم آتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ انصاف کانظام مشرف کیلئے الگ، ایان علی کیلئے الگ اور قندیل بلوچ کیلئے الگ ہے۔