- الإعلانات -

پیمرا نے عامر لیاقت کے پروگرام پر پابندی لگا دی

اس پروگرام کے میزبان عامر لیاقت حسین نے ایک پروگرام کے دوران ‘خودکشی کے مناظر’ دکھائے تھے جس پر چینیل کو 14 جون کو پیمرا کی جانب سے نوٹس جاری کرتے ہوئے 21 جون کو جوابدہی کا حکم دیا گیا تھا۔اب پیمرا کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق پروگرام پر تین روز تک کے لیے پابندی عائد کردی گئی ہے۔پیمرا شکایات کونسل سندھ نے پروگرام پر پابندی لگانے کا اعلان کیا جس کا اطلاق منگل سے جمعرات تک ہوگا اور ایسا نہ کرنے کی صورت میں چینل کو بند کرنے کا کہا گیا ہے۔پیمرا کے نوٹیفکیشن کے مطابق 6 جون کو جیو انٹرٹینمنٹ کے اس پروگرام میں ایک لڑکی کی پنکھے سے لٹک کر خودکشی کے مناظر دکھانے اور ایک مہمان کے محض جیتنے کی لالچ میں گالی نکالنے جو کہ براہ راست نشر ہوئی، جبکہ 25 جون کو ایک خاتون کالر کی نامناسب گفتگو آن ائیر جانے کے مناظر کو کونسل نے دیکھا،اسی طرح ایک کونسل ممبر نے میزبان کی کھمبے کے ساتھ لپٹ کر گانا سننے کی تفصیلات بھی دیگر ممبران کے ساتھ شیئر کیں۔مذکورہ ٹی وی چینل نے پروگرام کے خلاف موصول سینکڑوں شکایات پر تفصیلی جواب کے لیے 15 دن کا وقت مانگا تھا جس پر عید کی چھٹیوں کے بعد جواب دائر کرنے کی ہدایت کی گئی۔تاہم ضابطہ اخلاق کی مسلسل خلاف ورزی پر پیمرا نے انعام گھر پر 28 سے 30 جون تک پابندی عائد کردی ہے جبکہ چینیل کو آن ائیر معذرت نشر کرنے کی ہدایت بھی کی گئی۔

پیمرا کا کہنا تھا کہ یہ معذرت پروگرام کے میزبان عامر لیاقت حسین یکم جولائی کو پروگرام کے آغاز پر خود ناظرین سے واضح الفاظ یں مانگیں اور آئندہ ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی نہ کرنے کی یقین دہانی کرائیں گے، ایسا نہ کرنے کی صورت میں پروگرام پر غیرمعینہ مدت تک کے لیے پابندی لگادی جائے گی۔

یاد رہے کہ اس سے قبل پیمرا نے حمزہ علی عباسی پر بھی رمضان ٹرانسمیشن کے دوران قادیانیوں کے مسئلے پر 1973 کے پارلیمنٹ کے فیصلے کے خلاف گفتگو کرنے پر پابندی عائد کی تھی جبکہ اسی معاملے پر نیوز وی کے رمضان شو کے میزبان شبیر ابوطالب اور مولانا کوکب نورانی پر بھی پابندی عائد کی گئی تھی۔

تاہم بعد میں پیمرا کے سامنے دونوں چینیلز نے یقین دہانی کرائی تھی کہ وہ رسمی معذرت نشر کرکے ‘پروگرامز کے باعث ہونے والے انتشار کی روک تھام کریں گے’۔