- الإعلانات -

آج امت مسلمہ خلیفہ حق مولا علی کا یوم شہادت منا رہی ہے

لاہور  آج اکیس رمضان ہے۔ رمضان المبارک کے آخری عشرے کا پہلا روز اور حضرت علی کرم اللہ وجہہ کی دنیاوی عمر کا آخری روز۔ آج امت مسلمہ خلیفہ حق مولا علی کا یوم شہادت منا رہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق باب المدینہ العلم، معدن الحلم، شیر خدا‘ سیدنا علی کرم اللہ وجہہ الکریم کی ولادت تیرہ رجب پانچ سو اکسٹھ ہجری کو کعبتہ اللہ میں ہوئی۔ آپ پیغمبر اسلام حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے چچا زاد بھائی ہیں۔ بچپن ہی سے تربیت صحن بیت النبی میں پائی۔ یہی وجہ تھی کہ انتہائی کم عمری میں اسلام کی خدمت کرنا شروع کر دیا۔ ان کی صفات عالیہ اور خدمات کے باعث حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم ان کی بہت عزت کرتے تھے۔

کہیں رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : علیؓ مجھ سے ہیں اور میں علیؓ سے ہوں۔ کہیں ارشاد کیا : میں علم کا شہر ہوں اور علیؓ اس کا دروازہ۔ کبھی کہا : علیؓ کو مجھ سے وہ نسبت ہے جو ہارون علیہ السلام کو موسیٰ علیہ السلام سے تھی۔ مباہلہ کے واقعے میں انہیں نفسِ رسول ﷺ کا خطاب عطا ہوا۔ ہم شبیہ مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وسلم علی المرتضیٰ رضی اللہ عنہ کو یہ سعادت بھی نصیب ہوئی کہ ہجرت کی رات رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے انہیں اپنے بستر مبارک پر سونے کا حکم فرمایا۔

رسول اللہ ﷺ کی حضرت علیؓ سے محبت کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنی نورِ عین حضرت فاطمہ رضی اللہ تعالیٰ کا نکاح حضرت علی ابنِ طالب سے کیا۔ درہ خیبر کے فاتح اور خلیفہ حق حضرت علی ابن ابی طالب 19 رمضان40 ہجری صبح کے وقت عبدالرحمان ابن ملجم نے عین حالتِ نماز میں زہر میں بجھی تلوار سے حملہ کردیا جس سے وہ زخمی ہو گئے۔ زہر کا اثر جسم میں پھیلتا گیا اور 21 رمضان کو نمازِ فجر کے وقت آپ نے جام شہادت نوش کی