- الإعلانات -

مون سون کی پہلی بارش، کراچی پانی پانی، 220 فیڈر ٹرپ کر گئے،

کراچی: سندھ کے مختلف علاقوں میں بارشوں کا سلسلہ جاری ہے۔ ٹنڈو اللہ یار اور اس کے گرد و نواح میں بارش نے علاقہ مکینوں کیلئے روزے کا لطف دوبالا کر دیا۔ ٹنڈو غلام علی اور اس کے اردگرد کے علاقوں میں بھی بعد دوپہر تیز بارش ہوئی۔ حیدر آباد اور اس کے گرد و نواح میں بھی تیز بارش ہوئی۔  دوسری جانب گلستان جوہر، پی ای سی ایچ ایس، کورنگی، ملیر اور ناگن چورنگی سمیت صوبائی دارالحکومت کراچی کے مختلف علاقوں میں بارش سے گرمی کا زور تو ٹوٹ گیا لیکن کراچی میں موسلادھار بارش کی چند بوندیں گرنے سے 220 فیڈر ٹرپ کر گئے، کئی علاقوں میں تاریکی کا راج مستحکم ہو گیا، پیپری اور گھارو پمپنگ اسٹیشن پر بھی بجلی بند ہے۔ گورنر اور وزیر اعلیٰ ہاؤس سمیت شہر کا بڑا حصہ اندھیرے میں ڈوب گیا۔ نشیبی علاقوں میں پانی گھروں میں داخل ہو گیا جبکہ سڑکوں پر پانی جمع ہو جانے سے ٹریفک کی روانی بھی متاثر ہوئی۔ کراچی اور حیدر آباد کے علاوہ اندرون سندھ کے دیگر کئی علاقوں میں بھی موسلا دھار بارش ہوئی۔تھرپارکر کے مختلف علاقوں مٹھی، چھاچھڑو اور گرد و نواح میں موسلا دھار بارش ہوئی جس سے گرمی کی شدت کم ہو گئی۔ تھر کے مختلف علاقوں میں بارش سے قحط سے متاثرہ لوگوں کے چہرے خوشی سے کھل اٹھے نواب شاہ اور عمر کوٹ میں بھی موسلا دھار بارش ہوئی جس سے گرمی کا زور ٹوٹ گیا۔ بدین کے علاقہ پنگریو میں بھی بارش سے موسم خوشگوار ہو گیا۔   موسم کی خبر دینے والوں نے موجودہ اسپیل مزید دو روز جاری رہنے کے ساتھ ساتھ جولائی کے پہلے ہفتے اور عید کی چھٹیوں کے دوران اس سے بھی زیادہ بارشوں کی پیش گوئی کی ہے۔ اگلے چوبیس گھنٹوں کے دوران سندھ کے 80 فیصدعلاقوں میں بھی رم جھم متوقع ہے۔