- الإعلانات -

چترال: بارش کے بعد سیلابی ریلا، بچوں اور خواتین سمیت 30 افراد جاں بحق

چترال :میں بارش کے بعد سیلابی ریلے سے بچوں اور خواتین سمیت 30 افراد پانی میں بہہ گئے۔وزیر اعظم میاں‌محمد نواز شریف اور عمران خان کی جانب سے بھی اظہار تعزیتچترال میں بارش کے بعد آنیوالے سیلابی ریلے نے تباہی مچادی ، افسوسناک واقعے میں بچوں اور خواتین سمیت اکتیس افراد جاں بحق ہوئے ، سیلابی ریلے میں ایک مسجد اور متعدد گھر بہہ گئے ، علاقے میں مواصلات کا نظام بھی درہم برہم ہوگیا ۔ چترال کے گاؤں ارسون میں قیامت گذر گئی ۔ بارش کے بعد سیلابی ریلا آیا اور تباہی مچا گیا ۔ کسی کو سنبھلنے کے موقع نہیں ملا ، ضلعی ناظم مغفرت شاہ کے مطابق سیلاب رات دس بجے کے قریب آیا جس سے بڑے پیمانے پر نقصان ہوا ۔ ارسون گاؤں میں مسجد میں بھی ریلا داخل ہوا جس میں دس نمازی بہہ گئے جبکہ 20 زخمی ہوئے ۔ این ڈی ایم اے کے مطابق ریلے میں چھ سے سات مکانات تباہ ہوئے ، علاقے میں مواصلات کا نظام درہم برہم ہے ۔ ڈپٹی کمشنر چترال اسامہ وڑائچ نے سیلابی ریلوں میں اکتیس افراد کے بہہ جانے کی تصدیق کی ہے ۔ ایک ہی خاندان کے چھ افراد بھی سیلابی ریلے کی نذر ہوٖگئے ، دوسری طرف وزیر اعظم نوازشریف نے چترال میں سیلابی ریلے سے آنیوالی تباہی پر افسوس کا اظہار کیا ہے اور این ڈی ایم اے اور متعلقہ اداروں کو امدادی کارروائیاں تیز کرنے کی ہدایت کی ہے ۔ وزیر اعظم نے کہا ہے کہ متعلقہ ادارے سیلاب کی صورتحال سے مسلسل آگاہ رکھیں ۔ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے بھی چترال میں صوبائی حکومت کو فوری پر متحرک ہونے اور امدادی کارروائیاں تیز کرنے کی ہدایت کی