- الإعلانات -

قرضے اتارنا صرف وفاق کی ذمہ داری نہیں ، صوبوں کو بھی تعاون کرنا چاہئے ،نعیم لودھی

ملک میں جو بھی مسائل ہوں فوج پیش پیش ہوتی ہے، آپ کرونا کو دیکھ لیں فوج نے کتنی خدمات سر انجام دیں ،سچی بات میں گفتگو

اسلام آباد (روزنیوزرپورٹ)روزنیوز نے پروگرام ’’ سچی بات‘‘ میں گفتگو کرتے ہوئے دفاعی تجزیہ نگار جنرل (ر)نعیم خالد لودھی نے کہا کہ دفاعی بجٹ کے حوالے سے اپوزیشن نے حیرت انگیز بات کی ہے ، یہ لوگ ماضی میں دفاعی بجٹ پر تنقید کرتے تھے کہ اس کو کم کیا جائے ، لیکن اب پوائنٹ سکورنگ کر رہے ہیں ، تین سال ہو ہوئے فوج کی تنخواہیں نہیں بڑھیں ،دیگر اداروں کی تنخواہوں میں بھی اضافہ نہیں ، بین الاقوامی سطح پر پاک فوج کو 10ویں نمبر پر رکھا گیا ہے ، اس کا بجٹ 18یا 25نمبر پر آتا ہے، ہم اپنے سپاہی پر بھارت کے مقابلے میں آدھا بھی خرچ نہیں کرتے ، ہماری پاک فوج فرنٹ پر ڈیوٹی دے رہی ہے، ملک میں جو بھی مسائل ہوں فوج پیش پیش ہوتی ہے، آپ کرونا کو دیکھ لیں فوج نے کتنا کام کیا، فوج کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے دھیان سے بات کرنا چاہئے، یہ اچھا نہیں ہوتا ہے کہ صرف فوج کی تنخواہیں بڑھا دی جاتیں ، انہوں نے کہا کہ کوئی بھی انسان مخلص ہوتا ہے اس کا اخلاص ظاہر ہو جاتا ہے، قائد اعظم کی تقاریر ایسے لوگ سنتے تھے جس کی انہیں سمجھ نہیں آتی تھی لیکن انہیں معلوم تھا کہ وہ جو کچھ کہہ رہے ہیں کہ وہ عوام کے بھلے کی بات ہے ، عمران خان میں بھی ایسی ہی صلاحتیں موجود ہیں ، عوام کو پتہ ہے کہ وہ جو بھی کررہے ہیں اس میں ملک اور عوام کامفاد ہے ، نیازی صاحب دو چیزیں اہم ہیں ، دفاع اور قرضے اتارنے کا مسئلہ ، ان مسائل سے صوبے اپنے آپ کو مبراء قرار نہیں دے سکتے ، صرف وفاق کی ذمہ داری نہیں کہ وہ قرض اتارے، صوبوں کو بھی تعاون کرنا چاہئے ،ا نہوں نے کہا کہ 18ویں ترمیم پر بات ہونی چاہئے ، اس میں ترمیم سے صوبوں کی حیثیت پر کوئی فرق نہیں پڑے گا، اب دنیا بھر میں صدر ، وزیر اعظم کیلئے دو دفعہ الیکشن لڑنے کی قدغن موجود ہے، ہمارے ملک میں بھی ایسے ہی ہونا چاہئے، کوئی بھی امیدوار وہ دو دفعہ الیکشن لڑے ۔