- الإعلانات -

علی سدپارہ سمیت تین کوہ پیماؤں کی لاشیں مل گئیں، وزیراطلاعات گلگت بلتستان کا دعویٰ

پاکستان کے مرحوم کوہ پیما علی سدپارہ کے بیٹے ساجد سدپارہ اور ان کی ٹیم کو کے ٹو (K2) کے بوٹل نیک پر ایک لاش کی نشاندہی ہوئی ہے جبکہ وزیراطلاعات گلگت بلتستان فتح اللہ خان نے دعویٰ کیا ہے کہ علی سدپارہ سمیت تین کوہ پیما کی لاشیں مل گئیں ہیں۔

بیس کیمپ ذرائع کے مطابق رواں سال فروری میں کے ٹو پر لاپتہ کوہ پیماؤں کی لاشوں کی تلاش کا آپریشن ایک بار پھرجاری ہے۔ مرحوم علی سدپارہ کے بیٹے ساجد سدپارہ اور غیر ملکی کوہ پیما سرچ آپریشن میں شریک ہیں۔

بیس کیمپ ذرائع نے بتایا کہ ساجد سدپارہ اور ٹیم آج کیمپ 4 کے قریب پہنچی ہے جہاں ٹیم کو ڈرون کے ذریعے بوٹل نیک کے قریب ایک لاش دکھائی دی ہے۔ بیس کیمپ ذرائع کے مطابق لاش کی شناخت نہیں ہو سکی ہے۔

دوسری جانب وزیراطلاعات گلگت بلتستان فتح اللہ خان نے جیو نیوز سے گفتگو میں دعویٰ کیا ہے کہ علی سدپارہ سمیت تین کوہ پیماؤں کی لاشیں مل گئیں ہیں، ساجد سدپارہ اور ان کے ساتھ موجود کوہ پیما نے لاشوں کا پتا چلایا۔ انہوں نے کہا کہ ’پہلی لاش کی نشاندہی صبح 9 بجے ہوئی ہے اور وہ لاش جان اسنوری کی ہے جس نے پیلے اور کالے رنگ کے کپڑے پہن رکھے تھے جبکہ دیگر لاشوں کی بھی 12 بجے نشاندہی ہوئی‘۔

وزیراطلاعات نے بتایا کہ تین کوہ پیمائوں کی لاشیں بوٹل نیک بیس کیمپ سے ملیں۔ ان کا کہنا تھاکہ شام تک لاشوں کے مقام پر پہنچ جائیں گے اور اس کیلئے ہیلی کاپٹر اسٹینڈ بائی ہیں۔ خیال رہے کہ رواں سال فروری میں دنیا کی دوسری بلند چوٹی کے ٹو کی مہم جوئی کے دوران پاکستان کوہ پیما علی سدپارہ اور دو غیر ملکی کوہ پیماؤں لاپتہ ہوگئے تھے۔