- الإعلانات -

‘اغوا کاروں نے کئی بار کراچی سے نکلنے کی کوشش کی آخری بار کامیاب ہوئے

کراچی:  ٹانک سے بازیاب بیرسٹر اویس شاہ کا کہنا ہے کہ اغوا کاروں کی زبان سمجھ میں نہیں آتی تھی کئی دن آنکھوں میں پٹی باندھ کر باتھ روم میں بند رکھا۔ چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ کے بیٹے بیرسٹر اویس شاہ نے اغوا کی واردات کے حوالے سے تفصیلات سے پولیس کو آگاہ کر دیا ۔ چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ کے بیٹے اویس شاہ سے ڈی آئی جی سائوتھ منیر شیخ اور ڈی آئی جی سی آئی اے سلطان خواجہ نے رہائش گاہ پر ملاقات کی۔ ذرائع کے مطابق اویس شاہ نے پولیس افسران کو بتایا کہ اغوا کاروں کی زبان سمجھ نہیں آتی تھی۔ اغوا کاروں نے کئی بار انھیں کراچی سے دوسرے شہر لے جانے کی کوشش کی لیکن کامیاب نہ ہو سکے لیکن آخری کوشش پر اغوا کار دوسرے شہر منتقل کرنے میں کامیاب ہو گئے۔ بیرسٹر اویس شاہ کے مطابق اغوا کاروں نے ڈرا دھماکا کر زبردستی اپنی گاڑی میں بیٹھا کر اغوا کیا ۔ کئی دنوں تک آنکھوں پر پٹی پابند کر باتھ روم میں بند رکھا۔ دونوں ڈی آئی جیز نے ملاقات کے حوالے سے کراچی پولیس چیف مشتاق مہر کو بھی آگاہ کر دیا ہے۔ پولیس حکام کا کہنا ہے کہ اویس شاہ کے اغوا کاروں کو مدد فراہم کرنے والے ملزمان کو ٹریس کر کے گرفتار کیا جائے گا۔ اویس شاہ کو 29 روز بعد ٹانک سے گزشتہ روز بازیاب کرایا گیا تھا