- الإعلانات -

آزاد کشمیر کے تخت کا کون بنے گا’ سلطان‘ ،انتخابات کیلئے پولنگ جاری

شیر دھاڑے گا ،تیر نشانے پر لگے گا یا بلا میدان مارے گا۔۔آزاد کشمیر کے تخت کا کون بنے گا سلطان ،کہیں جھگڑا،کہیں گرما گرمی،کہیں نعرے بازی،ایکشن سے بھرپور بن گیا آزاد کشمیرکا الیکشن،باغ میں پیپلزپارٹی اورن لیگ کے کارکنوں کی ہاتھا پائی ،تین کارکن زخمی،پولنگ روک دی گئی۔ آزاد کشمیر انتخابات میں کہیں بد نظمی تو کہیں ضا بطہ اخلاق کی کھلم کھلا خلاف ورزی جاری ہے ۔ ڈھیری چودھریاں میں خواتین کے پولنگ اسٹیشن پر مرد عملے کی موجودگی پربے نظمی کی شکایات موصول ہوئی ہیں ۔ کراچی میں رینجرز نے آدم جی سائنس کالج میں قائم پولنگ اسٹیشن کے نزدیک لگے سیاسی جماعتوں کے کیمپ اکھاڑ دیئے ہیں۔ آزاد کشمیر انتخابات میں کہیں پولنگ اسٹیشن میں عملہ تاخیر سے پہنچا ہے تو کہیں سیاہی نہ ہونےکےباعث پولنگ وقت پر شروع نہ ہوسکی۔دوسری جانب لاہور میں ن لیگ اور پی ٹی آئی کے کارکنوں کی نعرے بازی جاری ہے ۔

مظفرآباد میں ایک پولنگ اسٹیشن کی چابیاں کھوگئیں۔ پولیس اہلکار اور پولنگ عملہ تالاتوڑ کر پولنگ اسٹیشن میں داخل ہوئے ۔پاک فوج کی نگرانی میں ہونے والے آزاد کشمیر کے انتخابات کیلئے سیکورٹی کے سخت انتظامات ہیں اور کسی بھی ناخوشگوار صورتحال سے نمٹنے کیلئے فوج ، ایف سی ، رینجرز اور پولیس کے اہلکار تمام پولنگ اسٹیشنوں پر تعینات ہیں۔چیف الیکشن کمشنر آزاد کشمیرانتخابات کے لیے انتظامات سے مطمئن ہیں ان کا کہنا ہے کہ ایسے اقدامات کیے گئے ہیں کہ کہیں جعلی اور بوگس ووٹ کاسٹ ہی نہیں کیے جاسکیں گے۔چیف سیکریٹری کا کہنا تھا کہ ابھی تک کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا ہے اور ہم ہر طرح کے حالات سے نمٹنےکےلیے تیارہیں۔

آزادکشمیر کی قانون ساز اسمبلی کے انتخابات کے لیے ااج ہونے والی پولنگ شام 5 بجےتک جاری رہےگی ۔ الیکشن میں سب سےزیادہ پیپلزپارٹی کے41 امیدوار میدان میں ہیں ۔ذرائع کے مطابق ڈھیری چودھریاں میں خواتین کے پولنگ اسٹیشن پر مرد عملے کی موجودگی پر بد نظمی کی شکایات بھی موصول ہوئی ہیں۔

آزاد کشمیر انتخانات میں مسلم لیگ ن نے38 امیدوار میدان میں اتارےہیںجبکہ تحریک انصاف کے32،مسلم کانفرنس کے23امیدوارقسمت آزمارہے ہیںجبکہ سنی اتحادکونسل کے12،جماعت اسلامی کے9 ، جےیوآئی کے8،ایم کیوایم،ایم ڈبلیوایم کے6،6امیدوارمیدان میں موجود ہیں۔ انتخابات میں 204 آزادامیدوار بھی مختلف حلقوں سے حصہ لے رہے ہیں