- الإعلانات -

نیشنل ایکشن پلان، وزیراعظم نے اعلیٰ سطح کا اجلاس کل طلب کرلیا

وزیراعظم ہائوس سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس بات کا فیصلہ وزیراعظم نواز شریف کی زیر صدارت اجلاس میں ہوا،وزیرداخلہ چودھری نثار علی خان نے نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمداور آئندہ کے اقدامات پر بریفنگ دی ۔ اجلاس میں ملک کی اندرونی سلامتی کی صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیا گیا، آپریشن ضرب عضب اور دہشت گردوں کے خلاف کارروائیوں کے نتائج پر بھی غور کیا گیا۔

قومی سلامتی کے مشیر ناصر خان جنجوعہ نے دہشت گردوں کی طرف سے آسان اہداف کو نشانہ بنانے کے بارے میں بریفنگ دی ۔ ناصر جنجوعہ کا کہنا تھا کہ دہشت گردی آپریشن ضرب عضب اور فاٹا میں فوج کی کامیاب کارروائیوں کے بعد معصوم شہریوں کو نشانہ بنارہے ہیں۔

وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ ہم ایک نظریے کے خلاف حالت جنگ لڑ رہے ہیں، یہ نظریہ ہماری انداز زندگی کو بدلنا چاہتاہے ،۔سانحہ کوئٹہ کے شہدا کا خون رائیگاں نہیں جائیگا، وزیراعظم نوازشریف نے کہا کہ حکومت سانحہ کوئٹہ میں ملوث دہشت گردوں کو انجام تک پہنچانے کے لیے اقدامات کریگی ۔

وزیراعظم نے کم سے کم وقت میں بہترین نتائج کے لیے وفاقی اور صوبائی انٹیلی جینس اداروں میں کوآرڈینیشن کو یقینی بنانے کی ہدایات دیں۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ملک کو ہر قسم کی دہشت گردی اور انتہاپسندی سے محفوظ بنانے کا عزم کررکھا ہے، ملک صحیح راستے پر ہے ، عوام کو محفوظ ، مستحکم اور خوشحال پاکستان دینگے، دہشت گردغلط فہمی میں مبتلا ہیں۔اور قوم میں انتشار اور عدم اتفاق کا بیج بونا چاہتے ہیں۔ مگر پوری قوم متحد ہے ، اور دہشت گردوں کے خلاف جاری کاررائیوں کی بھرپور حمایت کرتی ہے۔