- الإعلانات -

بارڈرمینجمنٹ کیلئے سول آرمڈ فورسزکے29ونگ بنانےکافیصلہ

وزیر اعظم نوازشریف کی زیر صدارت اعلیٰ سطح کے سیکورٹی اجلاس میں ملک کی اندرونی سلامتی، بارڈر مینجمنٹ کیلئےسول آرمڈ فورسزکے29 ونگ بنانےکافیصلہ کیا ہے۔

وزیر اعظم نواز شریف کی زیرصدارت ہونے والے اجلاس میں ملکی سلامتی کی صورتحال، آپریشن ضرب عضب،نیشنل ایکشن پلان پرعملدرآمد کےامور پرتفصیلی غورکیا گیا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ناصر خان جنجوعہ نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کی مانیٹرنگ ٹاسک فورس کے سربراہ ہوں گے جبکہ وزیر اعظم آفس کے ایڈیشنل سیکریٹری، چاروں آئی جیز ، سیکریٹری داخلہ ، ڈائریکٹر جنرل نیکٹا اور چیف سیکرٹریز مانیٹرنگ ٹاسک فورس کا حصہ ہیں۔

اجلاس میں مشیرسلامتی لیفٹیننٹ جنرل(ر) ناصر جنجوعہ،مشیرخارجہ سرتاج عزیز، ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل رضوان اختر، وزیرداخلہ چودھری نثاراور وزیرخزانہ اسحاق ڈار شریک تھے۔

واضح رہے کہ ملکی سیکورٹی سےمتعلق یہ مسلسل تیسرا اجلاس تھا، گزشتہ ہفتے سانحہ کوئٹہ کے بعد دو مسلسل اجلاس منعقد ہوئے تھے، اجلاس میں نیشنل ایکشن پلان پرعملدرآمدکا جائزہ لینے کے لئے مانیٹرنگ ٹاسک فورس قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا اور وفاقی و صوبائی حکومتوں کے نمائندے، وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی متعلقہ ایجنسیاں بھی ٹاسک فورس کا حصہ ہوں گی۔

اجلاس میں دہشت گرد تنظیموں کو ہرقسم کی فنڈنگ روکنے کیلئے نئی قانون سازی ،اینٹی منی لانڈرنگ اور رقوم کی ترسیل کا جامع نظام بنانے اور پارلیمنٹ سے منظور شدہ سائبر کرائمز بل پر بھی فوری عمل درآمد کرانے کا فیصلہ رکیا گیا۔