- الإعلانات -

روسی قونصل جنرل کا تحریک انصاف حکومت میں تیل کی خریداری کے معاہدے سے لاعلمی کا ااظہار

روسی قونصل جنرل آندرے وکٹرووچ فیڈروف نے پاکستان تحریک انصاف کے دور حکومت میں روس سے تیل کی خریداری بارےکسی بھی قسم کے معاہدے سے لاعلمی کا اظہار کیا ہے۔

روسی قونصل جنرل نے ایک حالیہ انٹرویو میں روس اور پاکستان کے مابین تجارتی تعلقات، روس یوکرین تنازع سمیت کئی امور پر گفتگو کی۔

قونصل جنرل نے کہا کہ پاکستان اور روس دوست ممالک ہیں، ہم پاکستان کو عزیز رکھتےہیں اور پاکستانیوں سے بھی امید رکھتے ہیں کہ وہ روس کو دوست ملک سمجھیں۔

آندرے وکٹرووچ نے انٹرویو میں پاکستان سے تجارتی اور معاشی تعلقات کے قیام کی خواہش کا اظہار بھی کیا۔

قونصل جنرل نے کہا کہ دونوں ممالک تیل ، گیس ، زراعت ، طبی اور جراحی آلات سمیت کئی شعبوں میں ایک دوسرے سے فائدہ اٹھاسکتے ہیں، مگر مغرب کی جانب سے عائددونوں ممالک پر غیر قانونی بندشیںتجارت کومتاثر کر رہی ہیں، جس کی وجہ سے پیسوں کی منتقلی میں مسئلہ آتا ہے، سومسئلے کے مستقل حل کے لیے دونوں ممالک کو سر جوڑ کر بیٹھنا ہوگا۔

قونصل جنرل نے سابق وزیراعظم عمران خان کے دورۂ روس میں زیر غور آئے امور پر بھی گفتگو کی ، مگر انھوں نے پاکستان کی جانب سے تیل کی خریداری کے حتمی معاہدے یا پاکستانی وزرا کےروس سے باقاعدہ تجارتی رابطے بارے لاعلمی کا اظہار کیا، البتہ یہ ضرور کہا کہ یہ معاملات زیربحث ضرورآئے ہیں۔

روسی قونصل جنرل کے مطابق روس اور یوکرین کے درمیان جاری تنازع کے حل میں مغربی ممالک سب سے بڑی رکاوٹ ہیں، جب بھی پرامن مذاکرات کی طرف قدم بڑھائے جاتے ہیں تو انھیں روک دیا جاتا ہے اور یہ سب امریکا کی ایما پر ہوتا ہے۔