- الإعلانات -

پارٹی پالیسی سے انحراف چھوٹی بات نہیں، یہ انسان کے ضمیر کا معاملہ ہے، سپریم کورٹ

چیف جسٹس سپریم کورٹ کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے آج پی ٹی آئی کے پنجاب اسمبلی  کے منحرف اراکین کی الیکشن کمیشن  کے خلاف اپیلوں کی سماعت کی۔

منحرف اراکین کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ پی ٹی آئی نے وزیراعلی پنجاب کے انتخاب کے لئے کوئی ہدایات جاری نہیں کی تھیں۔ وزارت اعلی کے لئے پی ٹی آئی کے امیدوار پرویز الہٰی نے انتخاب کے روز اجلاس کا بائیکاٹ کردیا تھا۔

چیف جسٹس سپریم کورٹ عمر عطا بندیال نے تبصرہ کیا کہ انحراف چھوٹی بات نہیں ہوتی، یہ انسان کے ضمیر کا معاملہ ہوتا ہے۔

چیف جسٹس نے مزید کہا کہ سپریم کورٹ آرٹیکل 63 اے کی تشریح میں انحراف کو پہلے ہی سرطان قرار دے چکی ہے۔

چیف جسٹس نے منحرف اراکین کے وکیل سے استفسار کیا کہ جب آپ کی جماعت نے اجلاس کا بائیکاٹ کر دیا تھا تو آپ نے شرکت کیوں کی؟

سماعت کے آخر میں عدالت نے منحرف اراکین کو پارٹی پالیسی کے خلاف مسلم لیگ (ن) کو ووٹ دینے کے نکتے پر تیاری کر کے آنے کا حکم دیتے ہوئے مقدمے کی سماعت غیر معینہ مدت کے لئے ملتوی کر دی۔