- الإعلانات -

بلوچستان اور خیبرپختونخوا میں طوفانی بارشوں سے تباہی ہی تباہی

بلوچستان اور خیبرپختونخوا سمیت ملک کے بالائی علاقوں میں طوفانی بارشوں اور سیلاب نے تباہی مچا دی ہے۔

بلوچستان میں چھتیں گرنے اور کرنٹ لگنے سے 39 افراد جاں بحق ہو گئے ہیں، جبکہ تین سو سے زائد مکانات کو نقصان پہنچا ہے، شدید بارشوں سے سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہو گئی ہیں۔

بلوچستان حکومت نے صوبے کو آفت زدہ قرار دے دیا ہے، اور ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے، جبکہ پی ڈی ایم اے نے ہائی الرٹ جاری کرنے کے ساتھ ساتھ امدادی کارروائیاں شروع کر دی ہیں۔

دوسری جانب خیبرپختونخوا سمیت ملک کے بالائی علاقوں میں مسلسل بارشیں ہر سُو تباہی کا منظر پیش کر رہی ہیں۔

لوئر دیر میں ندی نالے بپھر گئے ہیں، پانی کا ریلا ایک گاڑی بہا لے گیا ہے، تو ٹریفک مکمل طور معطل ہو گئی ہے۔

سوات میں مانکیال کے دو پل بہہ گئے ہیں، جبکہ بڈھی سیری روڈ ڈوب گئی ہے۔

اطلاعات کے مطابق میران شاہ میں دو خواتین ڈوب کر جاں بحق جبکہ 3 افراد زخمی ہوئے ہیں۔

گلگت میں غذر کے مقام پر سیلاب کے باعث 4 خواتین ریلے میں ڈوب کر جاں بحق ہو گئی ہیں۔