- الإعلانات -

وفاقی کابینہ نےسائبرکرائم ایکٹ 2016 کے تحت مقدمات کی تحقیقات ایف آئی اے کو سونپ دیں

وزیراعظم نوازشریف کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کےاجلاس میں فیصلے کیے گئے کہ سائبر کرائمز ایکٹ 2016 کے تحت سائبرکرائم کی تحقیقات ایف آئی اے کرےگی ۔

سپریم کورٹ کےحکم پر2014 سے 2016 کے ای سی سی،کابینہ کی نجکاری کمیٹی اور توانائی کمیٹی کے فیصلوں کی توثیق کردی گئی۔

ذرائع کا کہناہے کہ سائبر کرائم کے کیسز کی فارنزک تحقیقات کیلئے الگ شعبہ قائم کرنے کافیصلہ کیاگیاہے ۔ فارنزک تجزیے، چھان بین اور سفارشات کےلئےفارنزک انوسٹی گیشن کا شعبہ ایف آئی اے کو فراہم کرے گا ۔

وفاقی کابینہ نے دیامیر بھاشا ڈیم کیلئےاراضی کے حصول اور معاوضے کی ادائیگی کی منظوری بھی دے دی ۔ وزیراعظم نےکہا دیامیر بھاشا ڈیم کے متاثرہ افراد کو معاوضے کی ادائیگیوں میں شفافیت یقینی بنایا جائے۔توانائی کی ضروریات پورا کرنے کے لیے بڑے ہائیڈل پروجیکٹ بنا رہے ہیں جن سے سیلاب کے خطرات کامقابلہ بھی کیاجاسکے گا ۔

کابینہ نے افغان مہاجرین کے رجسٹریشن کارڈ کی مدت میں 31 مارچ 2017 تک سہ فریقی معاہدے کےتحت توسیع کی منظوری دے دی ۔وزیراعظم کاکہناتھا افغان مہاجرین کوخوف زدہ کرنے کی کسی صورت اجازت نہیں دی جائے گی ۔ ان کی واپسی کا عمل اس انداز میں ہو کہ سرحد کےدونوں اطراف برا تاثر نہ ملے۔

وزیراعظم نے وزارت سیفران کو افغان مہاجرین کی باعزت واپسی کے معاملے پرسیاسی قیادت اور افغان نمائندوں کے ساتھ وسیع البنیاد مشاورت کی جائے۔