- الإعلانات -

حالات کچھ بھی ہوں دہشت گردوں کو پنپنے نہیں دیں گے،نوازشریف

وزیراعظم نوازشریف کی زیرصدارت اجلاس میں نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کا تفصیلی جائزہ لیا گیا، اجلاس میں وفاق اور صوبوں کے درمیان مؤثر رابطوں پراتفاق کیا گیا۔

وزیراعظم نوازشریف کا کہناتھاکہ نیشنل ایکشن پلان کے مطلوبہ نتائج حاصل کرنا ہیں تو کوآرڈینیشن مزید بڑھانا ہوگی، دشمنوں کے عزائم ناکام بنانے کیلئے انٹیلی جنس معلومات کے حصول اور استعمال کے نظام کو مضبوط بنانا ہوگا۔

وزیراعظم نے کہا کہ سیکورٹی اداروں کی قربانیوں اور مؤثر کارروائیوں سے امن قائم ہوا، نیشنل ایکشن پلان تمام اسٹیک ہولڈرز کے اتفاق رائے سے بنایا گیا۔

انہوں نے کہا کہ ہم دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑ رہے ہیں، قوم توقع رکھتی ہے کہ ہم معاشرے کے شیطانوں سے ہمیشہ کے لیے چھٹکارہ حاصل کریں اور کسی صورت میں انہیں دوبارہ پنپنے نا دیں، انتہاپسندوں کے خلاف جنگ قومی پالیسی کے طور پر لڑرہے ہیں۔

اجلاس میں دہشت گردی کے مقدمات سے نمٹنے کے لیے تفتیش، پراسیکیوشن اور نظام عدل کو مضبوط بنانے کے لیے تجاویز پیش کی گئیں اور اتفاق کیا گیا کہ فوجداری نظام عدل پر پیش کردہ تجاویز پر قومی اتفاق رائے حاصل کیا جائیگا۔

اجلاس میں نیشنل ایکشن پلان کے تمام نکات پر یکساں عملدرآمد یقینی بنانے کا فیصلہ کیا گیا، اس حوالے سے نیپ پر یکساں عملدرآمد یقینی بنانے کے حوالے سے ٹائم لائن اور اہداف مقرر کیے جائیں گے۔