- الإعلانات -

غیرت کے نام پر قتل کی جانے والی سامعہ شاہدکے قتل کے مقدمے کو جہلم کی عدالت سے لاہور منقتلی

پاکستان میں مبینہ طور پر غیرت کے نام پر قتل کی جانے والی پاکستانی نژاد برطانوی خاتون سامعہ شاہد کے قتل کے مقدمے کو جہلم کی عدالت سے لاہور منقتلی کے لیے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کرلیا گیا ہے۔

سامعہ شاہد کے شوہر اور مدعی مختار کاظم نے اس مقصد کے لیے لاہور ہائیکورٹ کے روبرو درخواست منتقلی کی درخواست دائر کی ہے۔

درخواست میں سامعہ شاہد کے شوہر اور مقدمہ کے مدعی مختار کاظم نے یہ دعویٰ کیا کہ مقدمہ کی پیروی کرنے پر انھیں اور مقدمہ کے گواہوں کے جان کو شدید خطرہ ہے۔

درخواست میں الزام لگایا گیا کہ سامعہ کے والد شاہد اور پہلے شوہر شکیل سمیت دیگر ملزم بااثر افراد ہیں اور ان کی جانب سے سنگنیں نتائج کی دھمکیاں دی جارہی ہیں اور بتایا گیا کہ سنگین نتائج کی دھمکیاں اور جان کی حفاظت کے لیے درخواست گزار کو بیرون ملک منتقل ہونا پڑا ہے۔

تاہم لاہور ہائیکورٹ آفس نے درخواست اس اعتراض کے ساتھ واپس کردی کہ مقدمہ کی منتقلی کے لیے ہائیکورٹ کے راولپنڈی بنچ سے رجوع کیا جائے۔ درخواست گزار کے وکیل ملک اویس خالد نے درخواست دوبارہ دائر کی اور استدعا کی کہ اس کو اعتراض کے ساتھ سماعت کے لیے پیش کردیا جائے۔