- الإعلانات -

تاجروں کا مارکیٹیں اور دکانیں شام 7بجے بند کرنے سے صاف انکار

کراچی:سندھ کے تاجروں نے مارکیٹیں اور دکانیں شام سات بجے بند کرنے سے صاف انکار کردیا،منظور وسان کہتے ہیں وقت کا تعین صوبائی حکومت نے کرنا ہے،فیصلے پر عملدرآمد کرکے دکھائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیر صنعت و تجارت منظور وسان کی زیر صدارت کراچی میں مارکیٹیں اور دکانیں شام سات بجے بند کرنے کے فیصلے پر عملدرآمد کے حوالے سے اجلاس ہوا جس میں مشیر اطلاعات مولابخش چانڈیو،سعید غنی، بئریسٹر مرتضیٰ وھاب  سمیت  تاجر برادری کے منتخب نمائندوں اور صنعت کاروں نے شرکت کی۔ منظور وسان کا کہنا تھا کہ ابھی سندھ حکومت نےشام 7 بجے مارکٹیں بند کرنے کا فیصلہ نہیں کیا صرف وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کمیٹیاں بنائی ہیں کہ تاجروں سے پہلے اس سلسلے میں مشاورت کی جائے اور ان کی رائے اور تجاویز لی جائیں گی، جس سے وزیر اعلیٰ کو اگاہ کردیا جائے گا اور فیصلہ اس کے بعد ہی ہوگا۔

اجلاس میں تاجروں اور صنعتکاروں نے مارکیٹیں اور دکانیں سات بجے بند کرنے سے صاف انکار کردیا، تاجر رہنما عتیق میر نے کہا کہ مارکیٹیں 9 بجے بند کرنے کی رائے سامنے آئی ہے اب فیصلہ حکومت کو کرنا ہےکہ آیا ان کو یہ قبول ہے یا نہیں۔

تاجر برادری کا کہنا تھا کہ شادی ہال بند کرنے کا فیصلہ شہر کے ڈسپلن کے لیے بہت ہی اچھا ہے لیکن فیصلے میں اسٹیک ہولڈرز اور بلدیاتی نمائندوں کو اعتمود میں نہیں لیا گیا

صوبائی وزیر صنعت و تجارت منظور وسان کا کہنا تھا کہ تاجروں سے رائے لی ہے، 80 فیصد مذاکرات کامیاب ہوگئے ہیں اب فیصلہ حکومت کو کرنا ہے۔ منظور وسان نے کہا کے سندھ حکومت جو فیصلہ کرے گی اس پر عملدرآمد بھی کرکے دکھائے گی۔

صوبائی وزیر نے موجودہ سیاسی صورتحال کے حوالے سے پیش گوئی کرتے ہوئے کہا کہ 5 نومبر تک خطرات منڈلاتے نظر آرہے ہیں وہ سندھ کے لئے نہیں پاکستان کیلئے ہیں۔