- الإعلانات -

پانامہ پیپرز پر سپریم کورٹ کی کارروائی کا خیرمقدم کرتا ہوں:نواز شریف

اسلام آباد:سپریم کورٹ کی جانب سے پاناما لیکس پر نوٹس ملنے کے بعد وزیراعظم نواز شریف نے پالیسی بیان جاری کر دیا،وزیراعظم نے کہا کہ عوام کی عدالتیں فیصلے صادر کر رہی ہیں بہتر ہوگا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کا بھی انتظار کر لیا جائے۔

سپریم کورٹ کی جانب سے پاناما لیکس پر نوٹس جاری ہونے کے بعد وزیر اعظم نواز شریف نے اپنی قانونی ٹیم اور قریبی رفقا سے مشاورت کی ، قانونی ٹیم نے سپریم کورٹ کی قانونی کارروائی اور مستقبل سے متعلق بریفنگ دی ، اجلاس کے بعد وزیراعظم نواز شریف نے اس سے متعلق پالیسی بیان جاری کر دیا۔

وزیراعظم نواز شریف کا کہنا ہے کہ پانامہ پیپرز سپریم کورٹ میں کارروائی کے آغاز کا کھلے دل سے خیر مقدم کرتا ہوں ، ان کا مزید کہنا تھا کہ پاناما لیکس پر سپریم کورٹ کے معزز ریٹائرڈ جج صاحبان پر مشتمل کمیشن کا اعلان کیا گیا۔

اپوزیشن کی جانب سے ٹی او آرز کا مطالبہ بھی تسلیم کر لیا مگر ٹی او آرز تنازع شروع کر کے سپریم کورٹ کے راستے میں رکاوٹیں ڈالی گئیں۔

وزیراعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ حکومت نے معاملے سے نمٹنے کیلئے منتفہ ٹی او آز کی تیاری کے لیے پارلیمانی کمیٹی قائم کر دی مگر تمام تر کوششوں کے باوجود پارلیمانی کمیٹی میں ٹی او آرز پر فیصلہ نہیں ہو سکا۔

ان کا کہنا تھا کہ کمیشن کو مزید موثر اور طاقتور بنانے کے لئے ایک بل پارلیمنٹ میں پیش کر دیا لیکن مسلسل منفی رویہ جاری رکھتے ہوئے مسلمہ آئینی اور قانونی تقاضوں کے برعکس ایک متوازی بل پیش کر دیا گیا۔

وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ پانامہ پیپرز کا معاملہ اب الیکشن کمیشن، لاہور ہائیکورٹ اور سپریم کورٹ کے سامنے لایا جا چکا ہے ، میں آئین کی پاسداری ، قانون کی حکمرانی اور مکمل شفافیت پر کامل یقین رکھتا ہوں۔

وزیراعظم نواز شریف کا کہنا ہے کہ عوام کی عدالت تو پے در پے فیصلے صادر کر رہی ہے ، بہتر ہوگا کہ عدالت کے فیصلے کا انتظار بھی کر لیا جائے۔