- الإعلانات -

چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں5رکنی لارجر بنچ پاناما پیپرز کی تحقیقات

پاناما پیپرز کی تحقیقات کے لیے ٹی او آرز کیا ہوں گے ،کمیشن کی سربراہی کون سے جج کریں گے ، تحقیقات مکمل کرنے کے لیے کیا ٹائم فریم ہو گا ۔ وزیر اعظم اور ان کے اہل خانہ الزامات کا کیا جواب دیں گے ۔ اس اہم کیس کی سماعت آج سپریم کورٹ میں ہو گی ۔

چیف جسٹس پاکستان جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں5رکنی لارجر بنچ پاناما پیپرز کی تحقیقات کے لیے دائر مختلف آئینی درخواستوں کی سماعت کرے گا ۔اس بنچ میں جسٹس آصف سعید کھوسہ ، جسٹس امیر ہانی مسلم ، جسٹس عظمت سعید شیخ اور جسٹس اعجاز الاحسن شامل ہیں۔

بدھ کی سماعت میں وزیر اعظم، حکومت ، تحریک انصاف ، عوامی مسلم لیگ ،جماعت اسلامی سمیت دیگر نے تحقیقات کے لیے سپریم کورٹ کے جج کی سربراہی میں کمیشن کے قیام پرتحریری رضامندی ظاہر کی تھی ۔

عدالت حکومت اور درخواست گزار عمران خان، سراج الحق، شیخ رشید کی طرف سے کمیشن کے لیے ٹی او آرز کا جائزہ لے گی ۔ متفقہ ٹی او آر نہ ہونے کی صورت میں عدالت فیصلہ کرے گی ۔

سپریم کورٹ نے جمعرات کی سماعت سے پہلے وزیر اعظم نواز شریف اور ان کے اہل خانہ سمیت تمام فریقین کوجامع جواب داخل کرنے کی بھی ہدایت کی تھی ۔ حکمران خاندان کی طرف سے عدالت کو جمع کرایا جانے والا جواب انتہائی اہم ہو گا جس کا انتظار سبھی کو ہے ۔

آف شور کمپنیوں کے حوالے سے عمران خان اور جہانگیر ترین کے خلاف بھی الگ الگ آئینی درخواستیں دائر ہو چکی ہیں۔
سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی جماعت جسٹس اینڈ ڈیموکریٹک پارٹی نے بھی فریق مقدمہ بننے کی درخواست دے رکھی ہے