- الإعلانات -

شمالی وزیرستان; فضائی کارروائی میں 25 مبینہ دہشت گرد ہلاک.

پشاور: وفاق کے زیرِ انتظام قبائلی علاقے فاٹا کی ایجنسی شمالی وزیرستان میں فورسز کی فضائی کارروائی کے نتیجے میں 25 مبینہ دہشت گرد ہلاک ہوگئے۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ انٹرسروسز پبلک ریلیشنز (آئی ایس پی آر) کے مطابق پاک افغان سرحد کے قریب شمالی وزیرستان کی تحصیل دتہ خیل میں پاک فضائیہ کے جیٹ طیاروں کی بمباری کے نتیجے میں 25 دہشت گرد ہلاک ہوئے.سیکورٹی ذرائع کے مطابق دتہ خیل کے علاقے الوارا منڈی میں جیٹ طیاروں کی کارروائی میں مبینہ دہشت گردوں کے 5 ٹھکانے بھی تباہ ہوگئے.یاد رہے کہ وفاق کے زیرِ انتظام پاک افغان سرحد پر واقع شمالی وزیرستان، خیبر ایجنسی اوراورکزئی ایجنسی سمیت سات ایجنسیوں کو عسکریت پسندوں کی محفوظ پناہ گاہ سمجھا جاتا ہے۔حکومت اور کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کے درمیان امن مذاکرات کی ناکامی اور کراچی ایئرپورٹ پر حملے کے بعد پاک فوج نے 15 جون کو شمالی وزیرستان میں آپریشن ضربِ عضب شروع کیا تھا۔علاقے میں آزاد میڈیا کی رسائی نہ ہونے کی وجہ سے تمام تر تفصیلات آئی ایس پی آر کی جانب فراہم کی جاتی ہیں، تاہم فوج کی جانب سے آپریشن کے آغاز کے بعد ایک مرتبہ ملکی اور غیرملکی میڈیا کو تحصیل میرعلی کا دورہ کروایا گیا تھا۔شمالی وزیرستان کی تحصیل میرعلی کو دہشت گردوں سے خالی کروانے کے بعد سیکیورٹی فورسز نے آپریشن کا دائرہ کار شمالی وزیرستان کے دوردراز علاقوں تک بڑھا دیا اور خیبر ایجنسی میں اکتوبر 2014 میں آپریشن خیبر-ون جبکہ مارچ 2015 میں آپریشن خبیر-ٹو شروع کیا گیا.آپریشن خیبر ون اختتام پذیر ہوچکا ہے جبکہ خیبر ٹو بھی اپنے اختتام کے قریب ہے.