- الإعلانات -

بھارتی شہری عظمیٰ نے بھی ہائیکورٹ سے رجوع کرلیا

ملائیشیا میں پاکستانی نوجوان طاہرعلی سے شناسائی کے بعد اس سے ملاقات کے لیے یکم مئی کو پاکستان پہنچنے والی بھارتی خاتون عظمی نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں بھارت واپسی کیلئے درخواست جمع کرا دی ہے، درخواست میں عظمی نے اپنے شوہر اور وزارت خارجہ کو فریق بنایا ہے۔

درخواست پر عظمیٰ نے پاکستان میں رہائشی پتہ بھارتی ہائی کمیشن، ڈپلومیٹک انکلیو درج کیا ہے۔

بھارتی ہائی کمیشن کے فرسٹ سیکریٹری پیوش سنگھ بھی درخواست دائر کرنے وکیل کے ہمراہ عدالت پہنچے۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ عظمیٰ کو پولیس رپورٹنگ سے استثنا اور بھارت واپس جانے کی اجازت دی جائے، اس کی 5 سالہ بیٹی فلک بھارت میں بیمار ہے جس سے ملنا انتہائی ضروری ہے۔

درخواست میں عظمیٰ نے کہا ہے کہ طاہرعلی نے دھوکے سے اور زبردستی شادی کی، سفری دستاویزات بھی چھین لیں، بھارت واپسی کے لیے وزارت خارجہ کو ڈپلی کیٹ امیگریشن فارم جاری کرنے کی ہدایت کی جائے، اسلام آباد سے واہگہ بارڈر تک سفر کے دوران سیکورٹی فراہم کی جائے اور طاہرعلی کو ہراساں کرنے سے روکا جائے۔

درخواست کو جلد سماعت کے لیے مقرر کرنے کی بھی استدعا کی گئی ہے۔