- الإعلانات -

جوہری پروگرام پر کوئی ڈیل نہیں ہو گی،پاکستان

واشنگٹن: پاکستان نے بھارت کونیوکلیئر سپلائرز گروپ میں شامل کرنے کی امریکی پالیسی کو امتیازی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت کی جارحیت کا مقابلہ کرنے کے لیے محدود اثرات والے جوہری ہتھیار تیار کرلیے ہیں،ہمارے جوہری پروگرام کا مقصد بھارت کو جارحیت سے قبل ہی روکنا ہے جنگ کاآغاز کرنا نہیں،جوہری پروگرام پر امریکا سے کوئی بھی ڈیل نہیں ہو گی، وزیراعظم نواز شریف امریکی حکام سے لائن آف کنٹرول کی صورتحال اور مسئلہ کشمیر کے حل پر بات کریں گے،بھارت سمیت اپنے تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات قائم رکھنا چاہتے ہیں۔وزیراعظم نواز شریف کے دورہ امریکا سے قبل میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے سیکرٹری خارجہ اعزازاحمد چوہدری نے بتایا کہ دورے کے دوران پاکستان، امریکا کے ساتھ کسی بھی قسم کے جوہری معاہدے پر دستخط نہیں کرے گا۔ اپنے دورہ امریکہ میں وزیراعظم نواز شریف امریکی حکام سے لائن آف کنٹرول کی صورتحال پر بھی بات کریں گے اور ان پر زور کریں گے کہ وہ جنوبی ایشیا میں استحکام کے لیے کشمیر کے مسئلے کو حل کریں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان بھارت سمیت اپنے تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات قائم رکھنا چاہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا جوہری پروگرام صرف یک رخی ہے، تاکہ بھارت کو جارحیت سے قبل ہی روکا جائے۔ اس کا مقصد جنگ کا آغاز کرنا نہیں، بلکہ اپنا تحفظ کرنا ہے ۔ بھارت کے کولڈ اسٹارٹ ڈاکٹرائن کے حوالے سے اعزاز چوہدری نے بتایاکہ بھارت اس حکمت عملی پر عمل درآمد کرتے ہوئے پہلے ہی اپنی چھاوٴنیاں پاکستانی سرحد کے قریب تر لا چکا ہے۔