- الإعلانات -

تصویر کی اشاعت ،آئی بی اور وزارت داخلہ کی الزامات کی تر دید

وزارت داخلہ کے ترجمان نے الزام کو مضحکہ خیز قرار دیاہے جبکہ انٹیلی جینس بیورو کا کہنا ہے کہ نہ وہ جے آئی ٹی کا حصہ ہیں نہ ہی اس تصویر سے کوئی تعلق ہے ۔

ترجمان وزارت داخلہ کی طرف سے جاری اعلامیے کے مطابق جوڈیشل اکیڈمی کی صرف بیرونی سیکیورٹی اسلام آباد پولیس کے پاس ہے۔

اسلام آباد پولیس سمیت وزارتِ داخلہ کے کسی ڈپارٹمنٹ یا ماتحت ادارے کی رسائی نہ تو جے آئی ٹی کے دفاتر اور نہ اس کی کارروائی یا فلم بندی تک ہے۔

وزارت داخلہ کے ترجمان کا مزید کہنا تھاکہ ایک حساس مسئلے پراس انداز سے سیاست کرنا نامناسب ہے۔

دوسری طرف انٹیلی جینس بیورو نے بھی حسین نواز کی تصویر سے متعلق تردید کرتے ہوئے کہا کہ آئی بی ، مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کا حصہ نہیں اور نہ ہی اس تصویر سے آئی بی کا کوئی تعلق ہے ۔

آئی بی کے اعلیٰ حکام کے مطابق آئی بی سیاسی و عدالتی معاملات میں مداخلت نہیں کرتی بلکہ صرف اپنے پیشہ ورانہ کام پر توجہ دیتی ہے۔