- الإعلانات -

لاہور: ارفع کریم ٹاور کے قریب پراسرار دھماکا، 6 جاں بحق، متعدد زخمی

پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے علاقے کو مکمل طور پر سیل کر دیا۔ صورتحال کے پیش نظر ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی۔

 لاہور کے علاقے فیروز پور روڈ پر ارفع کریم ٹاور کے قریب پراسرار دھماکے سے 6 افراد جاں بحق جبکہ متعدد افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ جاں بحق ہونے والوں میں دو پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔ ذرائع کے مطابق یہ دھماکا ایک گاڑی کے اندر ہوا جس سے قریب کھڑی متعدد موٹر سائیکلوں اور گاڑیوں میں بھی آگ لگ گئی۔

عینی شاہدین کے مطابق ایک گاڑی ون وے ٹریفک کی خلاف ورزی کرتی ہوئی آئی اور سامنے سے آنے والی ایک موٹر سائیکل سے ٹکرا گئی۔ ٹکرانے کے فوری بعد گاڑی میں دھماکا ہو گیا جس سے موٹر سائیکل پر سوار ایک مرد، خاتون اور موقع پر موجود پولیس اہلکار جاں بحق ہو گئے۔

دھماکے کی اطلاع ملتے ہی پاک فوج، قانون نافذ کرنے والے ادارے اور ریسکیو کی ٹیمیں جائے حادثہ پہنچ گئیں اور ایمبیولینسوں کے ذریعے زخمیوں کو ہسپتال منتقل کیا گیا۔ ہسپتال ذرائع کے مطابق زخمیوں میں سے بعض افراد کی حالت نازک ہے، جنھیں بھرپور طبی امداد دی جا رہی ہے۔ ضلعی انتظامیہ کے حکام کا کہنا ہے کہ صورتحال کے پیش نظر ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے۔ دھماکے کی نوعیت کا ابھی تک پتہ نہیں چل سکا ہے۔

ترجمان پنجاب حکومت کہنا تھا کہ واقعے کے بعد علاقے کو مکمل طور پر سیل کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ارفع کریم ٹاور کے قریب پرانی عمارتوں کو مسمار کرنے کا آپریشن جاری تھا۔ دھماکے کی نوعیت جاننے کی کوشش کر رہے ہیں۔

وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے کوٹ لکھپت دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے پولیس حکام سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔ وزیر اعلیٰ نے دھماکے میں شہریوں کے جاں بحق اور زخمی ہونے پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ان کے لواحقین سے دلی ہمدردی اور اظہار تعزیت کیا ہے۔ وزیر اعلیٰ نے سختی سے ہدایت کی ہے کہ زخمی ہونے والے افراد کو علاج معالجہ کی بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں اور دھماکے کی جگہ پر امدادی سرگرمیاں تیز کی جائیں۔