- الإعلانات -

میرے خلاف تین جھوٹی ایف آئی آر کاٹی گئیں‘ عمران خان

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ میرے خلاف تین جھوٹی ایف آئی آرز کاٹی گئیں، جمہوریت میں اس طرح کا سلوک نہیں ہوتا‘ نواز شریف الیکشن کے دوران کسان پیکج دے رہے ہیں کوئی ایکشن نہیں لیا گیا‘ الیکشن کمیشن ایک پارٹی کے ہاتھ باندھ رہا ہے اور دوسری پارٹی کو آزادی دی ہوئی ہے‘ عوام صاف و شفاف انتخابات کے لئے ترس گئے ہیں‘ 2013 میں جن لوگوں نے دھاندلی کرائی ان کو ہٹانے کی بجائے وہی لوگ دوبارہ الیکشن کرارہے ہیں۔ وہ پیر کو یونین کونسل نمبر 23 بنی گالہ کے وارڈ نمبر 4ماڈل سکول فار بوائزمیں اپنا ووٹ کاسٹ کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ سیالکوٹ جارہاہوں اس لیے جلدی ووٹ کاسٹ کیاہے سیالکوٹ کے لوگوں تک اپنی پارٹی کا منشور پہنچانا میرا حق ہے۔ دنیا کی کسی بھی جمہوریت میں پارٹی سربراہ کو انتخابی مہم چلانے سے نہیں روکا جاتا۔ انہوں نے کہا کہ میرے پاس کسی قسم کے فنڈز نہیں اور نہ ہی کسی قسم کا عہدہ ہے لیکن اس کے باوجود مجھے انتخابی مہم چلانے سے روکنا امپائروں کی ملی بھگت کو واضح کرتا ہے۔عمران خان نے کہا کہ این اے 122 میں 53 ہزار ووٹ جعلی تھے لیکن کسی کے خلاف ایف آئی آر نہیں کٹی، 2013 کے الیکشن میں تاریخی دھاندلی ہوئی لیکن کسی کے خلاف ایف آئی آر نہیں کٹی، نواز شریف نے گلگت بلتستان کے الیکشن سے پہلے خصوصی پیکج دیا، جہانگیر ترین کا الیکشن آیا تو انہیں لودھراں یاد آگیا، بلدیاتی انتخابات سے پہلے کسان پیکج دیا لیکن نواز شریف کے خلاف کوئی ایف آئی آر درج نہیں کی گئی لیکن میرے خلاف صرف جلسوں میں تقریریں کرنے پر ایف آئی آر درج کرلی گئی۔عمران خان نے کہا کہ الیکشن کمیشن عوام کو بیوقوف نہ سمجھے ایک پارٹی کو بڑھاوا دیا جارہاہے جبکہ دوسری پارٹی کے ہاتھ باندھ رہے ہیں اور کہہ رہے ہیں کہ شفاف الیکشن کرارہے ہیں۔ملک شفاف الیکشن کو ترس گیا ہے الیکشن کمیشن کی ناانصافی کے خلاف عنقریب لوگ اٹھیں گے۔