- الإعلانات -

کراچی میں ملٹری پولیس کی گاڑی پر فائرنگ کے نتیجے میں 2 اہلکار ہلاک ہوگئے

کراچی: کراچی کے علاقے ایم اے جناح روڈ پر ملٹری پولیس کی گاڑی پر فائرنگ کے نتیجے میں 2 اہلکار ہلاک ہوگئے.سینیئر میڈیکولیگل آفیسر (ایم ایل او) سول ہسپتال ڈاکٹر ناصر شاہ کے مطابق ایک اہلکار کی ہلاکت ہسپتال پہنچنے پر ہوئی جبکہ دوسرے اہلکار نے ہسپتال میں دوران علاج دم توڑا.ہلاک اہلکاروں کی شناخت لانس نائیک راشد اور حوالدار ارشد کے نام سے کی گئی ہے.ایڈیشنل انسپکٹر جنرل (اے آئی جی) پولیس مشتاق مہر کے مطابق ایم اے جناح روڈ پر تبت سینٹر کے قریب ملٹری پولیس کی گاڑی پر نقاب پوش مسلح افراد نے نائن ایم ایم پستول سے فائرنگ کردی، جس سے 2 اہلکار زخمی ہوئے، جو بعد ازاں ہسپتال میں دم توڑ گئے.ملٹری پولیس کی گاڑی کا منظر، جس پر فائرنگ کی گئی۔ ڈی آئی جی ساو¿تھ کے مطابق حملہ آور موٹر سائیکل پر سوار تھے اور انھوں نے اہلکاروں کے جسم کے اوپری حصے کو نشانہ بنایا.عینی شاہدین کے مطابق گاڑی میں 4 اہلکار سوار تھے جبکہ حملہ آور فائرنگ کے بعد جائے وقوع سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے.رینجرز اور پولیس کی بھاری نفری بھی جائے وقوع پر پہنچ گئی اور علاقے کا محاصرہ کرکے شواہد اکٹھے کرنے شروع کردیئے. نیوز کے مطابق جائے وقوع سے ایک مشکوک شخص کو بھی حراست میں لے کر نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا.وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے ملٹری پولیس کی گاڑی پر فائرنگ کے واقعے کا نوٹس لے کر فوری تحقیقات کا حکم دے دیا.گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان نے بھی ایم اے جناح روڈ پر فائرنگ میں ملٹری پولیس اہلکاروں کی ہلاکت پر افسوس کا اظہار کیا.ڈاکٹر عشرت العباد نے آئی جی سندھ اور ایڈیشنل آئی جی کراچی کو فون کیا اور ملزمان کی فوری گرفتاری کی ہدایت کرتے ہوئے واقعہ کی رپورٹ 24 گھنٹے میں طلب کرلی.گورنر سندھ کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں فورسز کی قربانیاں لازوال ہیں اور اس طرح کے بزدلانہ دہشت گرد حملے ہمارے حوصلے پست نہیں کرسکتے.