- الإعلانات -

ایم کیو ایم کا ایک کارکن کراچی کی سینٹرل جیل میں ہلاک ہوگیا

متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کا ایک کارکن کراچی کی سینٹرل جیل میں ہلاک ہوگیا۔پارٹی کا دعویٰ ہے کہ اس کارکن کو جمعے کو رہا کیا جانا تھا۔ہسپتال کے ایک عہدیدار کے مطابق 38 سالہ ندیم احمد کو حالت بگڑنے پر کراچی سینٹرل جیل سے جمعہ کو طبی امداد کے لیے سول ہسپتال منتقل کیا گیا۔ان کا ہسپتال میں علاج جاری تھا تاہم دوران علاج ان کا انتقال ہوگیا. بعد ازاں ان کی لاش ہسپتال کے مردہ خانے میں منتقل کردی گئی۔متعلقہ مجسٹریٹ کو پوسٹمارٹم کے سلسلے میں طلب کیا گیا تاہم خاندان نے اپنے تحریری بیان میں جج سے کہا کہ وہ موت کی درست وجہ جاننے کے لیے لاش کا پوسٹ مارٹم نہیں چاہتے۔میڈیکولیگل آفیسر ڈاکٹر عبدالغفار شیخ نے بتایا کہ رشتےدار لاش کو اپنے ہمراہ لے گئے اور بظاہر جسم پر کسی قسم کے تشدد کے نشانات نہیں تھے۔دوسری جانب ایم کیو ایم کا کہنا ہے کہ مرحوم شخص اس کے یونٹ 52 کا کارکن تھا جسے 20 نومبر کو سندھ رینجرز نے گرفتار کیا تھا۔بعد ازاں 25 نومبر کو انہین گلشن پولیس اسٹیشن کے حوالے کردیا گیا جہاں سے اگلے روز انہیں سینٹرل جیل منتقل کیا گیا۔پارٹی عہدیدار نے دعویٰ کیا کہ چار بچوں کے باپ ندیم کے بارے میں خیال کیا جارہا تھا کہ انہیں جمعے کو رہا کردیا جائے گا۔