- الإعلانات -

بلوچستان کےنئے وزیراعلیٰ کون؟۔ ۔ ۔ ۔فیصلہ ہوگیا

وزیر اعظم نوا زشریف نے مری معاہدے کے تحت مسلم لیگ (ن) بلوچستان کے صدر سردار ثنائ اللہ زہری کو ڈاکٹر عبدالمالک کی جگہ نیا وزیر اعلیٰ بنانے کا حتمی فیصلہ کرلیا ہے جس کا باضابطہ اعلان بہت جلد کر دیا جائیگا۔ آئندہ 3 رو ز کے اندر ڈاکٹر عبدالمالک اپنے عہدے سے مستعفی ہو جائیں گے جس کے بعد بلوچستان اسمبلی کا اجلاس طلب کر کے سردار ثنائ اللہ زہری کو نیا و زیر اعلیٰ منتخب کرایا جائیگا۔ بلوچستان نیشنل پارٹی کے رہنما سینیٹر میر حاصل بزنجو نے رابطہ کرنے پر اس بات کی تصدیق کر دی ہے کہ وزیر اعظم نے مری معاہدے پر عملدرآمد کا فیصلہ کیا ہے اور بہت جلد ڈاکٹر عبدالمالک اپنے عہدے سے استعفیٰ دیدیں گے اور مسلم لیگ (ن) کا نیا وزیر اعلیٰ منتخب کرایا جائیگا۔ میر حاصل بزنجو نے مزید بتایا کہ وزیر اعلیٰ ڈاکٹر عبدالمالک پشتونخواہ ملی عوامی پارٹی کے صدر محمود خان اچکزئی اور ان کی وزیر اعظم نواز شریف سے اہم ملاقات ہوئی جس میں مری معاہدے پر عملدرآمد کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ دریں اثنائ زرائع کے مطابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کی سربراہی میں قائم خصوصی کمیٹی نے وزیر اعظم نوا زشریف کو اپنی سفارشات پیش کی تھیں جن میں یہ کہا گیا تھا کہ اگر مری معاہدے پر عملدرآمد نہ کیاگیا تو اس سے مسلم لیگ (ن) بلوچستان میں اختلافات پیدا ہو سکتے ہیں لہذا معاہدے پر عملدرآمد کیا جائے۔ وزیر داخلہ نے جمعرات کی صبح ہی وزیر اعظم سے اہم ملاقات کی جس کے بعد وزیر اعظم نے ڈاکٹر عبدالمالک ‘ میر حاصل بزنجو اور محمود خان اچکزئی سے ملاقات کی اور ان سے مری معاہدے پر عملدرآمد کے معاملہ پر بات چیت کی جس کے بعد وزیر داخلہ کی سربراہی میں قائم کابینہ کمیٹی نے وزیر اعظم سے ملاقات کی جس میں وزیر اطلاعات پرویز رشید ‘ وزیر خزانہ اسحاق ڈار اور وزیر سرحدی امور جنرل (ر) عبدالقادر بلوچ ‘ وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق اور وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف بھی شریک تھے۔ اس ملاقات میں مری معاہدے پر عملدرآمد کرنے کے امور کا تفصیلی جائزہ لیا گیا جس کے بعد مسلم لیگ (ن) کے صوبائی صدر سردار ثنائ اللہ زہری کو بھی بلوچستان ہا?س سے وزیر اعظم ہا?س بلایا گیا اور انہیں بلوچستان کا نیا وزیر اعلیٰ بنانے کے فیصلہ سے آگاہ کیا گیا