- الإعلانات -

دہشت گردی کے خطرات ابھی ختم نہیں ہوئے،وزیر داخلہ

قومی اسمبلی کا اجلاس اسپیکر سردار ایاز صادق کی زیر صدارت ہوا جس میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ گزشتہ اجلاس میں وزارت داخلہ کی کارکردگی پر بحث کرنے کی پیشکش کی، ہر وزیر ایوان کے سامنے جواب دہ ہے اور چاہتا ہوں کہ ایوان وزارت داخلہ کی کارکردگی پر بحث کرے۔
انہوں نے کہا کہ ایوان میں ہر وزیر کی کارکردگی کی غلطیوں کی نشاندہی کرنی چاہیے، وزارت داخلہ کی ڈھائی سالہ کارکردگی کی رپورٹ ایوان میں پیش کی اور میں وزرا کی ایوان کے سامنے احتساب کی روایت قائم کرنا چاہتا ہوں، جبکہ رینجرز کی ڈھائی سال کی کارکردگی کی رپورٹ بھی تیار کرلی گئی ہے۔
چوہدری نثار نے کہا کہ میں یہ نہیں کہتا کہ ڈھائی سال میں سب کچھ ٹھیک ہوگیا، یہ نہیں کہتا کہ کرپشن ختم ہوگئی لیکن وزارت میں خوف خدا لے آئے ہیں اور وزارت داخلہ اور ماتحت اداروں نے کرپشن کے خلاف سخت کارروائی کی۔
انہوں نے کہا کہ وزارت داخلہ نے سب سے زیادہ کارروائی اپنے محکمے میں کی، جعلی شناختی کارڈ بنانے اور انسانی اسمگلنگ کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی گئی اور جعلی شناختی کارڈ پر نادرا اہلکاورں کو صرف معطل ہی نہیں بلکہ گرفتار کیا گیا.
ان کا کہنا تھا کہ ملک میں امن و امان کی صورتحال کئی گنا بہتر ہوئی ہے لیکن دہشت گردی کے خلاف جنگ ابھی ختم نہیں ہوئی، پہلے روز کئی دھماکے ہوتے تھے لیکن اب ہفتے مہینے گزر جاتے ہیں ایک دھماکا نہیں ہوتا۔