- الإعلانات -

جمہوری آمریت،آمرانہ دورسے زیادہ بری ہے”عمران خان”

اسلام آباد:چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ کراچی میں ماڈل ٹاؤن کی تاریخ دہرائی گئی۔ نجکاری کرنی تھی تو پہلے اعتماد میں لیتے۔انھوں نے6فروری کو حکومتی پالیسیوں کے خلاف احتجاج کا اعلان کیا۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے تحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان کا کہنا تھا کہ جمہوری آمریت،آمرانہ دورسے زیادہ بری ہے۔اتنا ظلم کوپرویزمشرف کےدورمیں بھی نہیں ہوا۔ انھوں نے دھمکی دی کہ احتجاج ڈی چوک بھی پہنچ سکتا ہے۔ عمران خان نے واضح کیاکہ وہ خود بھی احتجاج میں شریک ہوں گے۔

پی آئی اے کے حوالے سے عمران خان نے کہا کہ ادارے میں ملازمین کی نوکریاں جارہی ہیں،ان کومطمئن کیا جائے۔ انھوں نے حکومت سے سوال کیا کہ بتایاجائےکہ نجکاری سےکیافائدہ ہوا؟۔ انھوں نے الزام عائد کیا کہ حکومت نے اپنے لوگوں کو نوازا ہے۔عمران خان نے تشویش ظاہر کی کہ حکومت تو کہتی تھی کہ وہ تجربہ کار ہے ۔اگر ایسا ہے تو اسٹیل مل کیوں بندہے؟۔

عمران خان کا کہناتھا کہ ملک میں کسانوں کا معاشی قتل عام کیا گیا۔کسانوں کا تاریخ میں کبھی اتنا براحال نہیں ہوا۔عمران خان نے تجویز دی کہ ڈیزل کی قیمت38روپےہونی چاہیے۔عمران خان نے کہا کہ حکومت5ہزارارب روپےکاقرضہ لےچکی ہے۔پارلیمنٹ سےپوچھےبغیر40ارب روپےکےٹیکس لگادیے۔گیس پر بھی 68 فیصد ٹیکس لگ چکا ہے۔

اورنج ٹرین منصوبے پر عمران خان نے تنقید کی کہ یہ منصوبہ 200 ارب کا قرضہ لے کر بنایا جارہا ہے۔وزیرکاگھربچانےکیلئےاورنج ٹرین کاروٹ بدلاجارہاہے۔اب اورنج ٹرین کو کچی آبادی سےگزاراجائےگ