- الإعلانات -

وزیر داخلہ نے اسلحہ لائسنسوں پر سے محدود پابندی اٹھالی

وزیر داخلہ نے اسلحہ لائسنسوں پر سے محدود پابندی اٹھالی ، ناکوں پر ٹریفک پولیس ہٹانے اور کاغذات چیک نہ کرنیکی ہدایت.پہلے مرحلے میں اسلحہ لائسنس میڈیا ہاؤسز کو جاری کئے جائیں گے‘ ہر میڈیا ہاؤس کو چار پرائیویٹ گارڈ رکھنا ضروری ہونگے‘ میڈیا ہاؤسز کی درخواست پر ایف سی اہلکاروں کو تعینات کیا جاسکے گا‘ زیادہ تر انٹیلی جنس اطلاعات جھوٹ پر مبنی ہوتی ہیں، ان کی میڈیا پر تشہیر نہیں ہونی چاہئے‘ میڈیا پر تشہیر کی وجہ سے خوف و ہراس پھیلتا ہے جو دہشت گرد چاہتے ہیں‘ میڈیا دہشت گردی کے حوالے سے بریکنگ نیوز کا مقابلہ نہ کرے‘ ہتھیاروں کی جنگ جیت رہے ہیں مگر نفسیاتی جنگ ہار رہے ہیں‘اسلام آباد میں آئندہ ماہ سیکیورٹی اداروں کو 150نئی گاڑیاں فراہم کی جائیں گی، اسلام آباد میں 350فوجی جوان ریپڈ ریسپانس فورس کے طور پر تعینات ہیں، گزشتہ ادوار میں ایس ایس پی‘ ایس ایچ او سمیت تمام پولیس افسران مہرے لگتے تھے‘ میں نے کسی ایک اہلکار کو پسند یا ناپسند کی بنیاد پر تعینات نہیں کیا‘ سکیورٹی کمپنیاں مافیا بنی ہوئی ہیں‘ سکیورٹی کمپنیوں کو ایک ہفتے کا ٹائم دیا ہے‘ مناسب سکیورٹی فراہم نہ کرنے والی کمپنیوں کے لائسنس منسوخ کردیئے جائینگے‘ ہم تنقید کے بادشاہ ہیں عملاً کچھ نہیں کرتے‘ ملک میں امن کے لئے ہر ایک کو کام کرنا ہوگا‘ ہم میں بہت سی کمزوریاں ہیں جن کو مل کر ختم کرینگے ‘ اسلام آباد سمیت پورے ملک کو امن کا گہوارہ بنائینگے‘ راولپنڈی وقار النساء کالج میں ایک بارہ بور کے فائر نے افراتفری پھیلا دی‘ اسلام آباد میں کچی آبادیاں اور رہائشی علاقوں میں پرائیویٹ سکول قائم کرنے میں مدد فراہم کرنے والے سی ڈی اے افسران کے خلاف ایکشن لیا جائے گا