- الإعلانات -

2013 میں روزانہ 5 سے 7 دھماکے ہوتے تھے”چوہدری نثار علی خان”

اسلام آباد : وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ دہشت گردی اور عسکریت پسندی میں ملوث تنظیمیں داعش کا نام استعمال کر رہی ہیں اور اس شدت پسند تنظیم کے نام پر کارروائیاں کی جا رہی ہیں۔

کلر سیداں میں ریسکیو 1122 کی ایک تقریب کے دوران خطاب کرتے ہوئے وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ ایک مخصوص گروپ ہے جس نے اس بات کو مسئلہ بنایا ہوا ہے.

ان کا کہنا تھا کہ انھوں نے یہ کبھی نہیں کہا کہ داعش پاکستان میں موجود نہیں ہے، داعش ایک عربی تنظیم ہے جو مشرق وسطیٰ اور شمالی افریقہ میں موجود ہے، یہ تنظیم اُس شکل میں پاکستان میں موجود نہیں ہے۔

چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ 2013 میں روزانہ 5 سے 7 دھماکے ہوتے تھے، آج ہفتوں اور مہینوں گزر جاتے ہیں کوئی دھماکا نہیں ہوتا۔

وفاقی وزیر داخلہ نے مزید کہا کہ فوج کی قربانیوں کے نتیجے میں قوم دہشت گردی کے خلاف جنگ جیت رہی ہے، ہمیں نفسیاتی جنگ میں کمزوری نہیں دکھانی، لیکن کسی ایک واقعے پر الزام تراشی کرنے والے دشمن کے عزم کو مضبوط کرتے ہیں۔