- الإعلانات -

اگر مولانا عبدالعزیز نے کوئی قانون توڑا تو ایکشن ہوگا”چوہدری نثار”

اسلام آباد : وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ مولانا عبد العزیز کو سرکاری گارڈز پیپلز پارٹی نے دیئے، ان کو جمعے کا خطبہ دینے سے میں نے روکا، چوہدری نثار نے واضح کیا کہ میں نے کبھی نہیں کہا کہ مولانا عبد العزیز کے خلاف مقدمات نہیں ہیں۔

ٹیکسلا میں پریس کانفرنس کے دوران مولانا عبدالعزیز سے متعلق چوہدری نثار نے کہا کہ میں نے کبھی نہیں کہا کہ مولانا عبدالعزیز کے خلاف کوئی ایف آئی آر نہیں، مولانا عبدالعزیز کے خلاف 31 کیسز تھے،جن میں سے بارہ سے تیرہ کیسز سنگین نوعیت کے تھے، جس پر موت کی سزا بھی ہوسکتی تھی، تاہم ایک بات تو طے ہے کہ کوئی بھی ہو کہیں بھی ہو دہشت گردوں کا مکمل صفایا کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ مجھ سے کہا جاتا ہے کہ مولانا عبدالعزیز کیخلاف وزیر داخلہ کارروائی کیوں نہیں کرتے، مولانا عزیز کی گرفتاری کا معاملہ نان ایشو ہے،جب کہ یہ مسئلہ سینیٹ میں ہے، کچھ انتظار کرلیں،معاملے پر پورا بیان دوں گا، اگر مولانا عبدالعزیز نے کوئی قانون توڑا تو ایکشن ہوگا اور ان کے خلاف کوئی ثبوت ہے تو سامنے لائے جائیں۔

انہوں نے کہا پچھلی حکومت میں مولانا عزیز جمعہ کا خطبہ دیتے رہے، مولانا عزیز کو خطبہ دینے سے میں نے روکا، انہیں کے دور حکومت میں عبد العزیز کو سرکاری گارڈز تک دیئے گئے تھے۔